ٹیم کیلئے اسپورٹس ماہر نفسیات کی تقرری پر غور:آرتھر

 پاکستان کرکٹ ٹیم کے ٹسٹ میاچس میں کم رنز کا ہدف نہ حاصل کرنے پر ہیڈ کوچ مکی آرتھر حیران، پریشان اور دکھی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہم سال میں دوسری بار اتنے کم رنوں کا ہدف لینے کے بعد ہارے ہیں، کوئی مسئلہ ضرور ہے جس سے بطور ٹیم چھٹکارا پاناہے۔ میں نے پاکستان کرکٹ بورڈ سے ٹیم کیلئے اسپورٹس ماہر نفسیات کی تقرری کی بات کی ہے۔ ابوظبی میں شکست پر میرے ساتھ ساتھ تمام کھلاڑی اور اسٹاف افسردہ ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کوشش کریںگے کہ دوسرا میچ جیت سکیں۔ یہ بات یکسر غلط ہے کہ کھلاڑی سہل پسندی کا شکار ہوگئے تھے۔ ہیڈ کوچ نے بیاٹسمین اظہر علی اور اسد شفیق کا دفاع کرتے ہوئے کہاکہ اظہر نے حالات کے مطابق بیٹنگ کی۔ وہ حسن علی کے آئوٹ ہونے کے بعد نمبر گیارہ بیاٹسمین محمد عباس کو بولرز سے بچانا چاہتے تھے چونکہ فیلڈرز بائونڈری لائن پر تھے اس لیے چوکے یا دو رنز لینا مشکل ثابت ہورہا تھا۔ انہوں نے سنگلز کا سہارا لیا۔ مکی آرتھر نے مزید کہاکہ اسد شفیق تکنیکی لحاظ سے بہترین بیٹنگ کررہے ہیں، انہوں نے دونوں اننگز میں چالیس سے زائد رنز بنائے۔ اگر آپ بڑی اننگز نہ کھیلیں تو یہ اچھا نہیں۔ انہیں اگلی منزل پر جانا ہوگا، بڑے اسکور کرنے ہوں گے۔ انہوں نے کھلاڑیوں کی اہلیت پر بھروسے کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ ہفتے سے شروع ہونے والے دوسرے ٹسٹ میں واپسی کریںگے۔

جواب چھوڑیں