عراق میں شدید بارش و سیلاب 23 افراد ہلاک

عراق میں شدید بارشوں اور سیلاب کی زد میں آکر 9 بچوں سمیت 23 افراد ہلاک ہوگئے۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق عراق میں ہونے والی مسلسل بارشوں نے سیلاب کی صورت اختیار کر لی ہے، سیلاب کا پانی رہائشی علاقوں میں داخل ہو گیا اور بڑے پیمانے پر تباہی مچائی۔ریسکیو اداروں کا کہنا ہے کہ صوبے نینوا کے ضلع القریہ میں قائم ایک پناہ گزین کیمپ بھی سیلابی ریلے میں بہہ گیا جس کے نتیجے میں 9 بچے ہلاک ہوگئے، شمالی صوبے صلاح الدین میں 7 شہریوں کے سیلابی ریلے میں بہہ جانے کی اطلاع ہے۔اسی طرح جنوبی ضلع ناصریہ میں ایک مکان کی چھت گرنے سے ماں اور بیٹا ملبے تلے دب کر ہلاک ہوگئے جب کہ دیگر اموات ہورڈنگز، درخت گرنے اور بجلی کے تار سے کرنٹ لگنے کے باعث ہوئیں۔دوسری جانب عراق کے سیکیورٹی حکام نے دعویٰ کیا ہے کہ کرکوک کے علاقے میں کرد عسکری تنظیم پیش مرگا کے 3 جنگجو بھی سیلاب بہہ گئے جب کہ عسکریت پسندوں کا ایک کیمپ بھی بارش اور سیلاب کی نذر ہوگیا۔عراق کی حکومت نے غیر متوقع بارشوں اور سیلاب سے نبرد ا?زما ہونے کے لیے متاثرہ علاقوں میں ایمرجنسی نافذ کردی ہے، اسپتال اور ریسکیو اداروں کے عملے کی چھٹیاں منسوخ کردی گئی ہیں اور درجنوں ریلیف مراکز قائم کردیئے گئے ہیں۔

جواب چھوڑیں