کے سی آر پرغلط حکمرانی کاالزام من گھڑت :ونودکمار

ٹی آرایس کے رکن پارلیمنٹ بی ونود کمار نے پارٹی سربراہ کے چندرشیکھررائو کے خلاف چیرپرسن یوپی اے سونیاگاندھی کے الزامات کی مذمت کی اورکہاکہ سونیا گاندھی کی ہندی تقریر کے ترجمہ کے وقت مترجم شراون کمارنے اپنی طرف سے کئی الفاظ کا اضافہ کیاہے ۔ ہندی اوراردو سے واقف افراد سونیا کی ہندی تقریر کے متن کواچھی طرح سمجھ چکے ہیں ۔جبکہ کانگریس ترجمان شراون کمار نے سونیا کی ہندی تقریر کے متن کے تلگومیں ترجمہ کرتے وقت اپنی طرف سے کئی الفاظ کااضافہ کردیاہے ۔ کمار کی اس حرکت پر ہندی اوراردو سے واقف افراد افسوس کااظہار کررہے ہیں۔ بی ونود کمار نے آج تلنگانہ بھون میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ سونیا گاندھی نے کے چندر شیکھررائو پر غلط حکمرانی کا جوالزام عائد کیاہے وہ حقائق پر مبنی نہیںہے ۔انہوں نے کہاکہ کے چندر شیکھررائونے بحیثیت چیف منسٹر عوام کی بہبود اور ریاست کی ترقی کے لئے کام کئے ہیں۔ جس کے سبب قومی سطح پر حکومت تلنگانہ کوبہترین کارکردگی کے ایوارڈس حاصل ہوئے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ کانگریس کے برسر اقتدارریاستوں کے وزراء نے بھی تلنگانہ کا دورہ کرتے ہوئے یہاں کی فلاحی اسکیمات کی ستائش کی ہے ۔ انہوںنے کانگریس قائدین کے اس دعویٰ کومسترد کردیا کہ علحدہ تلنگانہ کاقیام کانگریس کی مرہون منت ہے ۔ کے چندرشیکھررائو کے مرن برت کے باعث سابق مرکزی حکومت نے علحدہ تلنگانہ کی تشکیل کا اعلان کیا تھا۔ انہوںنے کہاکہ سابق یوپی اے حکومت نے علحدہ تلنگانہ کے قیام میں غیر ضروری تاخیر کی تھی جس کے باعث کئی نوجوانوں نے خودکشی کرلی تھی۔ صدر تلنگانہ جناسمیتی پروفیسر کودنڈارام کواس بارے میں سب کچھ معلوم ہے ۔ انہوںنے کہاکہ اسمبلی انتخابات میں ٹی آرایس کی شاندارکامیابی یقینی ہے ۔

جواب چھوڑیں