کے سی آر کادورکرپشن ‘کمیشن ‘دغابازی سے عبارت : سرجے والا

کانگریس ترجمان سندیپ سنگھ سرجے والا نے چیف منسٹر کے چندرشیکھررائو کی زیر قیادت ٹی آرایس حکومت کے 4سال تین ماہ کی حکمرانی کوکرپشن ‘کمیشن اور دغابازی سے تعبیر کرتے ہوئے حکومت کے خلاف 24 الزامات اور بدعنوانیوں پرمشتمل عوامی چارج شیٹ پیش کی اور کے سی آر کوکنگ آف کرپشن قرار دیتے ہوئے اس کو گنیزبک آف ورلڈ ریکارڈ میں درج کئے جانے کے قابل قرار دیا ۔ آج یہاں گاندھی بھون میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سندیپ سرجے والا نے کہاکہ کے سی آر نے وعدہ کیا تھا کہ نیاتلنگانہ تشکیل دیاجائے گا لیکن کے سی آر کی کارمیں صرف 5افراد خاندان کوہی جگہ دی گئی ۔ کار میں تلنگانہ عوام کے لئے کوئی جگہ نہیں دی گئی ۔ یہ ایسی کارہے جو عوام کے لئے بیکار ہے اوریہ کرپشن میں تیزدوڑتی ہے ۔ کے سی آر نے تلنگانہ تحریک کا اغوا کرتے ہوئے تلنگانہ کی تشکیل کا سہرا اپنے سرلے لیااورحکومت کی تشکیل کے بعد 4سال 3ماہ کی حکمرانی کے دوران کرپشن میں ملوث ہوکر تلنگانہ کے 3.5 کروڑ عوام کی اعتماد شکنی کی ۔گھرمیں بیٹھ کر ناقص حکمرانی کے ذریعہ تلنگانہ عوام کے خوابوں کوچکناچورکردیا۔ تلنگانہ کے لئے جانوں کی قربانی دینے والے نوجوانوں کے ارکان خاندان کو پرسہ تک نہیں دیا ۔ انہوںنے زرعی شعبہ کونظرانداز کردیا جس کی وجہ سے 4500کسان خودکشی پرمجبورہوگئے ۔ زرعی پیدا وار کی اقل ترین قیمت ادا نہیں کی گئی ۔ آبپاشی پراجکٹس کوری ڈیزائن کرتے ہوئے ان کی لاگت میں 50ہزار کروڑ کااضافہ کردیا ۔محکمہ صحت اور محکمہ پولیس میں گاڑیوں اور عصری آلات کی خریدی میں بڑے پیمانہ پربدعنوانیاں ہوئی ہیں۔ تلنگانہ کے اضلاع نظام آباد ‘نلگنڈہ ‘کھمم ‘ ورنگل میں بڑے پیمانہ پر ریت مافیا کے ساتھ ٹی آرایس قائدین کا گٹھ جوڑرہاہے ۔ میاں پور اراضی اسکام میں سرکاری اراضی کو خانگی افراد کے نام پررجسٹریشن کراتے ہوئے کروڑہا روپے کا سرکاری خزانہ کونقصان پہنچایا گیا۔ بغیر کسی ٹنڈرمحکمہ پولیس میں 300 کروڑ کی گاڑیاں خریدی گئیں۔ مشن کاکتیہ اور مشن بھاگیرتا کے تحت ٹنڈرالاٹمنٹ میں کنٹراکٹر سے کمیشن وصول کیاگیا۔ ٹی آرایس کے جنرل سکریٹری کیشورائو کومحکمہ جنگلات کی 50 ایکر اراضی فروخت کی گئی ۔ مشن بھاگیرتا کے تحت پایٹپو کی خریدی میں بڑے پیمانے پر گھپلا کیاگیا ہے ۔ ڈبل بیڈروم مکانات کی فراہمی کا وعدہ کرکے عوام کو دھوکہ دیا گیا ۔اس اسکیم میں بھی بڑے پیمانہ پر بدعنوانیوں سرزدہوئی ہیں۔ کانگریس پارٹی برسراقتدار آنے پر مذکورہ چارج شیٹ میں عائد کئے گئے تمام الزامات کی مقررہ مدت میں تحقیقات کروائی جائے گی اوراس میں ملوث تمام قائدین اور افراد کے خلاف کاروائی کرتے ہوئے انہیں جیل روانہ کیا جائے گا۔ سندیپ سرجے والا نے الزام عائد کیا کہ ٹی آرایس اوربی جے پی میں غیر معلنہ مفاہمت ہے ۔ اسمبلی انتخابات میں ٹی آرایس کوووٹ دینا بی جے پی کو ووٹ دینے کے مماثل ہوگا۔ کے سی آر ‘نریندر مودی کے آلہ کار بن کر ان کے اشاروں پر کام کررہے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ اقتدار میں آنے کے بعد کانگریس‘ تمام ترقیاتی کاموں کو جاری رکھے گی ۔ پریس کانفرنس میں آرسی کنتیا ‘ناصر حسین ایم پی ‘ عامرجاوید ودیگر موجودتھے۔

جواب چھوڑیں