پاکستان‘ ہندوستان کے ساتھ مہذب تعلقات کا خواہاں۔ کرتارپور میں عمران خان کا خطاب

وزیراعظم عمران خان نے چہارشنبہ کے دن کہا کہ پاکستان ‘ ہندوستان کے ساتھ مضبوط اور مہذب رشتہ چاہتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک اپنے تمام مسائل بشمول کشمیر عزم و حوصلہ کے ساتھ حل کرسکتے ہیں۔ انہوں نے یہاں تاریخی راہداری کا سنگ بنیاد رکھا جو سرحد کے دونوں جانب 2 گردواروں کو جوڑے گی۔ کرتار پور راہداری پاکستان میں دربار صاحب کرتار پور کو ہندوستان کے ضلع گرداسپور کے ڈیرہ بابا نانک سے جوڑے گی۔ دربار صاحب کرتارپور‘ سکھ مت کے بانی گرو نانک دیو کی آخری آرام گاہ ہے۔ کرتار پور راہداری سے ہندوستانی سکھ یاتریوں کو ویزا کے بغیر آنے جانے کی سہولت ملے گی۔ انہیں صرف ایک پرمٹ لینا ہوگا۔ پاکستان میں کرتار پور صاحب دریائے راوی کے کنارے واقع ہے۔ ڈیرہ بابا نانک سے اس کا فاصلہ لگ بھگ 4کیلو میٹر ہے۔ اسے گرو نانک نے 1522 میں قائم کیا تھا۔ سمجھا جاتا ہے کہ گرو نانک نے اپنی زندگی کے 18 سال کرتارپور میں گذارے۔ پہلا گردوارہ کرتار پور صاحب وہاں بنا جہاں کہا جاتا ہے کہ گرو نانک نے آخری سانس لی۔ عمران خان نے تقریب سے خطاب میں کہا کہ ہم ہندوستان کے ساتھ اپنے تعلقات میں پیشرفت چاہتے ہیں۔ تقریب میں پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ‘ سرکاری عہدیدار اور ہندوستانی وزرا ہرسمرت کور بادل اور ہردیپ سنگھ پوری کے علاوہ بیرونی سفارت کاروں نے شرکت کی۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کئی سال کی جنگ لڑنے والے فرانس اور جرمنی امن سے رہ سکتے ہیں تو ہندوستان اور پاکستان کیوں نہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ہندوستان سمجھ نہیں سکتے کہ اللہ نے انہیں کتنے مواقع دیئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ جب بھی ہندوستان جاتے ہیں ان سے کہا جاتا ہے کہ سیاستداں متحد ہیں لیکن فوج دونوں ممالک کے درمیان دوستی ہونے نہیں دیتی۔ عمران خان نے کہا کہ آ ج میں کہتا ہوں کہ ہمارے سیاسی قائدین‘ ہماری فوج اور ہمارے تمام دیگر ادارے ہم خیال ہم آواز ہیں۔ ہم آگے بڑھنا چاہتے ہیں۔ ہم مہذب رشتہ چاہتے ہیں۔ ہمارا صرف ایک مسئلہ ہے کشمیر۔ انسان چاند پر چہل قدمی کرسکتا ہے تو ایسا کونسا مسئلہ ہے جسے ہم حل نہیں کرسکتے؟۔ عمران خان نے کہا کہ میں آپ کو یقین دلاتا ہوں کہ ہم یہ مسئلہ حل کرسکتے ہیں لیکن اس کے لئے عزم و حوصلہ اور بڑے خواب دیکھنا ضروری ہے۔ تصور کیجئے تجارت شروع ہوجائے‘ ہمارا رشتہ سدھر جائے تو دونوں ممالک کتنا فیض پائیں گے۔ انہوں نے اپنی پچھلی بات دہرائی کہ ہندوستان ایک قدم آگے بڑھے گا تو پاکستان دوستی کے لئے دو قدم آگے بڑھائے گا۔ انہوں نے کہا کہ دونوں طرف سے غلطیاں ہوئی ہیں اور دونوں ممالک کو ماضی میں نہیں جینا چاہئے۔ انہوں نے تقریب میں موجود ہندوستان اور پاکستان کے ہزاروں سکھوں سے کہا کہ ہم آپ کے لئے کرتار پور دربار کو بہتر بناتے رہیں گے۔ ہندوستانی پنجاب کے کابینی وزیر نوجوت سنگھ سدھو نے کہا کہ خون خرابہ بہت ہوچکا ہے یہ گلیارا خطہ میں قیام ِ امن کا بڑا موقع فراہم کرے گا۔ مرکزی وزیر ہرسمرت کور نے کہا کہ دیوارِ برلن گرسکتی ہے تو ہندوستان اور پاکستان کے درمیان نفرت اور بے اعتمادی کا بھی خاتمہ ہونا چاہئے۔

جواب چھوڑیں