گورنر جموں وکشمیر ستیہ پال ملک کو تبادلہ کا اندیشہ

گورنر ستیہ پال ملک نے چہارشنبہ کے دن کہا کہ جموں وکشمیر سے ان کا تبادلہ ہوسکتا ہے کیونکہ انہوںنے ریمارک کیا تھا کہ مرکز‘ پیپلز کانفرنس قائد سجاد لون کو چیف منسٹر بنانا چاہتا تھا۔ سینئر کانگریس قائد گردھاری لال ڈوگرہ کی برسی پر یہاں ایک تقریب میں ستیہ پال ملک نے کہا کہ جب تک میں یہاں ہوں‘ ہوں۔ میرے ہاتھ میں نہیں ہے‘ تبادلہ کا خطرہ برقرار ہے۔ مجھے پتہ نہیں کب یہاں سے میرا تبادلہ ہوجائے۔ میری نوکری نہیں جائے گی لیکن جب تک میں یہاں ہوں میں عوام کو یقین دلاتا ہوں کہ وہ جب بھی مجھے پکاریں گے‘ میں حاضر ہوں۔ ستیہ پال ملک نے 24 نومبر کو گوالیار میں کھلے عام مانا تھا کہ انہوں نے جموں و کشمیر کی صورتحال سے نمٹنے دہلی کی بات مانی ہوتی تو وہ بی جے پی کے تائیدی سجاد لون کو چیف منسٹر بنادیتے لیکن انہوں نے ایسا کرنا نہیں چاہا۔ستیہ پال ملک کے ان ریمارکس پر راج بھون نے بیان جاری کرکے کہا تھا کہ ریاستی اسمبلی کی تحلیل میں گورنر نے معروضی اور غیرجانبدارانہ فیصلہ کیا۔ مرکز کا نہ تو کوئی دباؤ تھا اور نہ کسی قسم کی کوئی مداخلت۔ بعض نیوز چیانلس نے گورنر کے بیان کی غلط تشریح کی ۔ انہوں نے معاملہ کو ایسا پیش کیا جیسے مرکزی حکومت نے دباؤ ڈالا ہو۔

جواب چھوڑیں