اوپیک تیل کی مارکیٹ میں توازن کیلئے پیداوار میں’ ’مناسب کٹوتی‘‘ چاہتی ہے: سعودی عرب

سعودی عرب کے وزیر توانائی خالد الفالح نے کہا ہے کہ تیل برآمد کرنے والے ملکوں کی تنظیم اوپیک خام تیل کی گرتی ہوئی قیمتوں کو برقرار رکھنے کے لیے پیداوار میں ’’مناسب‘‘ حد تک کٹوتی چاہتی ہے۔انھوں نے آسٹریا کے دارالحکومت ویانا میں اوپیک کے اجلاس سے قبل صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ’’ہم مارکیٹ میں توازن کے لیے تنظیم کے رکن ممالک کی تیل کی پیداوار میں مناسب اور برابر کٹوتی چاہتے ہیں ‘‘۔انھوں نے بتایا کہ اوپیک اور تیل پیدا کرنے والے غیر اوپیک ممالک کے درمیان تیل کی پیداوار میں کمی کے لیے ابھی کسی سمجھوتے پر اتفاق نہیں ہوا ہے اور انھیں توقع ہے کہ آج جمعہ کو اس ضمن میں کوئی سمجھوتا طے پاجائے گا۔خالد الفالح کا کہنا تھا کہ’’ تمام آپشنز زیر غور ہیں اور ان میں کوئی سمجھوتا طے نہ پانا بھی شامل ہے۔اگر کوئی بھی ملک پیداوار میں کمی کو تیار نہیں ہوا تو پھر ہم انتظار کریں گے۔تیل کی پیداوار میں یومیہ پانچ لاکھ سے پندرہ لاکھ بیرل تک یومیہ کمی کی تجویز زیر غور ہے لیکن اگر اوپیک اور غیراوپیک ممالک دس لاکھ بیرل تک پیداوار میں کمی پر متفق ہوجاتے ہیں تو یہ بھی مناسب ہوگی‘‘۔

جواب چھوڑیں