وسندھرا راجے‘ شرد یادو کےتبصرہ پر برہم

 چیف منسٹر راجستھان وسندھرا راجے نے جمعہ کے دن سابق جنتادل یو قائد شرد یادو کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا کیونکہ انہوں نے ایک انتخابی ریالی میں ان کی (وسندھرا) جسمانی ساخت کے تعلق سے کچھ کہہ دیا۔ وسندھرا نے الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا کہ وہ اس کا نوٹ لے۔ شردیادو ‘ راجستھان میں انتخابی مہم کے آخری دن الور میں ریالی سے خطاب کے دوران ذاتیات پر اتر آئے تھے اور انہوں نے وسندھرا کو موٹی کہہ دیا تھا۔ انہوں نے عوام سے کہا تھا کہ موٹی کو آرام کرنے دیں۔ وسندھرا راجے نے کہا کہ یہ ان کی اور خواتین کی بے عزتی ہے۔ ایک تجربہ کار قائد سے ایسے تبصرہ کی امید نہیں کی جاسکتی۔ چیف منسٹر نے کہا کہ شرد یادو کے میرے خاندان سے اچھے تعلقات ہیں اس کے باوجود وہ زبان پر قابو نہیں رکھ سکے۔ الیکشن کمیشن اس کا نوٹ لے اور ایک مثال قائم کرے تاکہ مستقبل میں ایسا نہ ہو۔ سوشل میڈیا پر ویڈیو میں شرد یادو کو یہ کہتے سنا گیا کہ وسندھرا راجے مدھیہ پردیش کی بیٹی ہیں ۔ عوام کو چاہئے کہ انہیں آرام کرنے دیں کیونکہ وہ بے حد تھک گئی ہیں۔ وہ پہلے دبلی پتلی تھیں اب موٹی ہوگئی ہیں۔ شرد یادو اپنے لوک تنترک جنتادل کے لئے مہم چلانے راجستھان آئے تھے۔

جواب چھوڑیں