یوگی، انتہائی نااہل چیف منسٹر : سماج وادی پارٹی

سماج وادی پارٹی (ایس پی) نے آج یوگی آدتیہ ناتھ کو ’’انتہائی نااہل چیف منسٹر‘‘ قرار دیا اور ان پر الزام عائد کیا کہ وہ اترپردیش میں فرقہ وارانہ جذبات کو بھڑکانے کی کوشش کررہے ہیں۔ بلند شہر تشدد کے بارے میں آدتیہ ناتھ کے بیان کا حوالہ دیتے ہوئے جس میں انہوں نے اسے محض ایک ’’حادثہ‘‘ قرار دیا تھا ، پارٹی کے ترجمان عبدالحفیظ گاندھی نے کہا کہ اِس سے ظاہر ہوتا ہے کہ چیف منسٹر اِس واقعہ کے سلسلہ میں کتنے غیرسنجیدہ ہیں ، جب کہ اس واقعہ میں ایک پولیس انسپکٹر سمیت دو افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ سماج وادی پارٹی قائد نے کہا کہ2019ء کے لوک سبھا انتخابات سے قبل چیف منسٹر شرمناک طور پر ریاست میں سیاست کو فرقہ وارانہ بنا رہے ہیں ۔ انہوں نے اس بات کی بھی نشاندہی کی کہ حکومت یا پولیس کو اس معاملہ کے اصل سازشی یوگیش راج کو گرفتار کرنے سے کوئی دلچسپی نہیں ہے ، جس کا نام ایف آئی آر میں درج کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اوپر سے دیا جانے والا پیام انتہائی واضح ہے کہ بی جے پی کیڈرس ، اس سے ملحق تنظیموں اور اس کی نظریاتی رہنما آر ایس ایس اگر قانون بھی اپنے ہاتھ میں لے لیں تو انہیں کوئی نقصان نہیں پہنچے گا۔ سماج وادی پارٹی کے ترجمان نے کہا کہ ترقی کی باتیں اور ’’سب کا ساتھ سب کا وکاس‘‘ جیسے نعرے کھوکھلے ہیں اور اس حکومت کا ایجنڈا سماج کو فرقہ وارانہ اور مذہبی خطوط پر بانٹنا ہے ۔ یہاں یہ تذکرہ مناسب ہوگا کہ بجرنگ دل کے ضلع کنوینر یوگیش راج کی گرفتاری میں ناکامی پر ریاستی حکومت کو مختلف گوشوں سے تنقیدوں کا سامنا ہے۔ یوگیش نے مبینہ ذبیحہ گاؤ کے نام پر نہ صرف افراتفری مچائی بلکہ تشدد بھی بھڑکایا ۔ ایف آئی آر میں 25 افراد کا نام درج کرایا گیا تھا ، جن کے منجملہ دیگر 9 ملزمین کو اب تک گرفتار کیا گیا ہے ۔ ریاستی حکومت نے ہفتہ کے روز ڈسٹرکٹ پولیس چیف اور دیگر دو پولیس عہدیداروں کا بروقت کارروائی نہ کرنے پر بلند شہر سے تبادلہ کردیا ہے۔

جواب چھوڑیں