وی وی پیاٹس سلیپسکی بھی گنتی کرنے شراون کمار کا مطالبہ

تلنگانہ پردیش کانگریس کے انتخابی مہم کمیٹی کے کنوینر اور حلقہ اسمبلی خیریت آباد کے پرجا کوٹمی امیدوارڈاکٹر شراون داسوجو نے کہا کہ وہ ریٹرننگ آفیسر حلقہ خیریت آباد کو ایک یادداشت پیش کرچکے ہیں جس میں انہوں نے ریٹرننگ آفیسر سے اس بات کی خواہش کرچکے ہیں کہ وہ حلقہ کے تمام 238 بوتھس کے ووٹوں کی گنتی کے ساتھ وی وی پیاٹس کے سلیپس کی بھی رائے شماری کرایں۔ ڈاکٹر شراون نے کہا کہ حلقہ کے بیشتر مراکز رائے دہی پر پولنگ کا آغاز 2 تا 3 گھنٹوں کی تاخیر سے ہوا۔ فنی خرابی کی شکایت پر الکٹرانک ووٹنگ مشینوں کو تبدیل کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ میڈیا میں ایسی اطلاعات آرہی ہیں کہ بلوٹوتھ ٹکنالوجی کی مدد سے الکٹرانک ووٹنگ مشینوں سے چھیڑ چھاڑ کی جاسکتی ہے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ فہرست رائے دہندگان سے سینکڑوں افراد کے نام غائب پائے گئے جبکہ ان افراد کے پاس فوٹو شناختی کارڈز موجود ہیں۔ کئی خاندانوں کے افراد کے نام مختلف بوتھس کی فہرستوں میں درج کیا گیا ہے۔ ایسا جان بوجھ کر کیا گیا ہے۔ انہوں نے سی ای او ڈاکٹر رجت کمار کے بیان کا حوالہ دیا جس میں کمار نے اس بات کا اعتراف کیا کہ ووٹرلسٹ سے ہزاروں افراد کے نام حذف کردئے گئے اور انہوں نے اس سلسلہ میں انہوں نے معذرت خواہی بھی کی ہے۔ کانگریس قائد نے الیکشن کمیشن اور ریٹرننگ آفیسر پرزوردیا کہ ان حالات میں الکٹرانک ووٹینگ مشینوں کے ووٹوں کی گنتی کے ساتھ وی وی پیاٹس کے سلیپس کی بھی گنتی کرائیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر دو لاکھ سے کم پولنگ ہوئی ہے تو وہ تمام اخراجات برداشت کرنے کے لئے تیار ہیں۔ اگر ووٹوں کے ساتھ وی وی پیاٹس کے سلیپس کی گنتی نہیں کی جائے گی تو پھر وی وی پیاٹس کو متعارف کرانے کا مقصد ختم ہوجائے گا۔

جواب چھوڑیں