شام سے امریکی فوج کے ساز و سامان کے انخلا کا آغاز

 امریکی فوج نے شام سے اپنے فوجی ساز و سامان کو نکالنا شروع کر دیا ہے۔ اس بات کی تصدیق امریکی وزارت دفاع کے ایک ذمے دار نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی سے گفتگو میں کی۔ یاد رہے کہ شام میں تعینات 2000 امریکی فوجیوں کے انخلا کا شیڈول ابھی تک غیر واضح ہے۔ مذکورہ امریکی ذمے دار کا کہنا تھا کہ “میں شام سے ساز و سامان کی منتقلی کی تصدیق کر سکتا ہوں۔ البتہ سکیورٹی وجوہات کے سبب میں فی الحال مزید معلومات نہیں دوں گا”۔ اس سے قبل امریکی نیوز چینل “سی این این” نے آخری چند روز کے دوران اس ساز و سامان کے انخلا کی بات کی تھی۔ چینل نے امریکی انتظامیہ کے ایک عہدے دار کے حوالے سے بتایا تھا کہ ساز و سامان کی منتقلی شام سے امریکی فوج کا انخلا شروع ہونے کا اشارہ ہے۔ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے جمعرات کے روز بتایا کہ شام سے امریکی انخلا عمل میں آئے گا۔ انہوں نے باور کرایا کہ واشنگٹن شام سے آخری ایرانی فوجی کو نکال باہر کرنے تک “سفارت کاری” کو کام میں لاتا رہے گا۔ گزشتہ اتوار کے روز وائٹ ہاؤس میں قومی سلامتی کے مشیر جون بولٹن نے اسرائیل کے دورے میں کہ کہا تھا کہ شام سے امریکی انخلا وہاں پر حلیفوں کے دفاع کی “ضمانت” کے ساتھ عمل میں آنا چاہیے۔ اس وقت 2000 کے قریب امریکی فوجی شام میں موجود ہیں۔ خانہ جنگی سے تباہ حال ملک میں موجود امریکی فوجیوں کی اکثریت داعش تنظیم کے خلاف لڑنے والی مقامی فورسز کو تربیت دے رہی ہے۔

جواب چھوڑیں