تین طلاق آرڈیننس اور کوٹہ بل کو صدرجمہوریہ کی منظوری

 صدرجمہوریہ رامناتھ کووند نے آج تین طلاق آرڈیننس کی منظوری دے دی۔ اِس طرح بیک وقت طلاق دینے کے عمل کو ایک فوجداری جرم قراردیا گیا ہے۔ تین طلاق پر مذکورہ آرڈیننس‘ مرکزی کابینہ نے گذشتہ پنجشنبہ کو دوسری مرتبہ نافذ کیا تھا کیونکہ ایسے سابق آرڈیننس کی میعاد گذشتہ 22جنوری کو ختم ہوگئی۔ پہلا آرڈیننس گذشتہ ستمبر میں جاری کیا گیا تھا۔ تاہم پہلے آرڈیننس کو ایک قانون میں تبدیل کرنے کیلئے بل‘ راجیہ سبھا میں منظور نہیں کیا جاسکا کیونکہ اپوزیشن نے ایوان بالا میں اِس بل کی منظوری کی مخالفت کی۔ اسی دوران صدرجمہوریہ نے دستوری ( 124ویں) ترمیمی بل 2019 کو منظوری دے دی جس کے تحت ( عام زمرہ کے) شہریوں کے معاشی طورپر پسماندہ طبقات (EWS) کیلئے تعلیمی اداروں اور روزگار کے مواقع میں 10فیصد تحفظات دیئے گئے ۔اِس طرح مذکورہ بل کے‘ ایک قانون بن جانے کی راہ ہموار ہوتی ہے۔ تاہم اِس سے پہلے حکومتیں ‘ متعلقہ قواعد وضع کریںگی۔ مرکزی کابینہ نے مذکورہ دستوری ترمیمی بل کی منظوری گذشتہ 8جنوری کو دی تھی اور اِس کے دوسرے ہی دن یعنی 9جنوری کو لوک سبھا نے یہ بل منظور کیا تھا۔ 9جنوری ہی کو یہ بل راجیہ سبھا نے بھی منظور کیا ۔ اِس کے بعد بغرض منظوری یہ بل صدرجمہوریہ کو پیش کیا گیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *