حیدرآباد کو عالمی شہر بنانے کیلئے عہدیداروں کا تعاون ضروری:میئر جی ایچ ایم سی بی رام موہن

میئر جی ایچ ایم سی بی رام موہن نے آج کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ حیدرآباد کو عالمی شہر کا درجہ دلانے کے لئے کوشاں ہیں‘ اس کے لئے ہم سب کو مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ میئر بی رام موہن نے ساؤتھ زون کے سوچھ سرویکشن پروگرام کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی وزارت شہری ترقیات کی جانب سے منائے جانے والا پروگرام سوچھ سرویکشن میں حیدرآباد شہر کو بہتر مقام حاصل کرنے کے لئے اس پروگرام کو مؤثر طریقہ سے کامیاب بنایا جائے۔ میئر نے آج سینٹیشن کے عملہ سے کہا کہ شہر کی صفائی کا خاص خیال رکھیں۔ انہوں نے بلدی ملازمین پر زور دیا کہ اپنی خصوصی دلچسپی کے ذریعہ حیدرآباد شہر کو ترقی دینے میں کوتاہی نہ کریں۔ اس موقع پر کمشنر جی ایچ ایم سی ایم دانا کشور نے بلدی عملہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ شہر حیدرآباد کو آلودگی سے دور رکھنے میں تمام شہریوں اور ملازمین کو اپنے رویہ میں تبدیلی لانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ شہر کی آبادی ایک کروڑ سے متجاوز کرچکی ہے جبکہ سینٹیشن کا 30 ہزار عملہ کام کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مستقبل میں این جی اوز کی خدمات حاصل کرتے ہوئے شہریوں کو صفائی اور صحت کے بارے میں باشعور بنانے کے لئے اور شہر کی ترقی میں شہریوں کی ذمہ داری کے لئے مہم کا آغاز کیا جائے گا۔ انہوں نے شہریوں سے اپیل کی کہ وہ سڑک پر کچرا نہ پھینکیں بلکہ کچرا کی نکاسی کے لئے بلدی عملہ کی خدمات سے استفادہ کریں۔ کمشنر نے کہا کہ جو لوگ سڑکوں پر کچرا ڈال رہے ہیں ان پر بھاری جرمانے عائد کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لوگ مکانوں سے پانی سڑک پر چھوڑ رہے ہیں جس کے باعث سڑکیں خراب ہورہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کئی لوگ سڑکوں پر اپنی گاڑیوں کی واشنگ کررہے ہیں جس سے سڑک کو نقصان ہورہا ہے‘ اس نقصان کی وجہ سے جی ایچ ایم سی پر مالی بوجھ عائد ہورہا ہے۔ کمشنر نے بلدی عہدیداروں کو ہدایت دی کہ سرکاری جائیداد کو نقصان پہنچانے پر جرمانے عائد کریں۔ انہوں نے کہاکہ نالہ میں کچرا ڈالنے والوں کے خلاف کارروائی بھی کی جائے گی۔ اس موقع پر میئر جی رام موہن نے سینیٹری فیلڈ اسسٹنٹس میں بہتر خدمات انجام دینے والوں کو انعامات تقسیم کئے۔ انڈیشنل کمشنر سینیٹیشن و ٹرانسپورٹ روی کرن اور دوسرے عہدیدار موجود تھے۔

جواب چھوڑیں