دمشق میں حزب اللہ کے اسلحہ گوداموں پر اسرائیلی بمباری

شام سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق اسرائیل نے ایک بار پھر دارالحکومت دمشق کے بین الاقوامی فضائی اڈے کے قریب بمباری کی ہے۔ اس بمباری میں ایران اور حزب اللہ کے فوجی مراکز اور اسلحہ گوداموں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔شامی حکومت کے ترجمان ذرائع ابلاغ نے دعویٰ کیا ہے کہ محکمہ دفاع نے اسرائیل کا ایک بڑافضائی حملہ ناکام بناتے ہوئے متعدد میزائل ہدف تک پہنچنے سے قبل ہی مار گرائے ہیں۔ دوسری جانب شامی فوج کے ایک ذریعے کا کہنا ہے کہ جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب اسرائیل نے دمشق کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے قریب بمباری کی جس میں حزب اللہ کے اسلحہ گوداموں کو نشانہ بنایا گیا۔ بمباری سے متعدد اسلحہ ڈپو تباہ ہوگئے ہیں۔سوشل میڈیا پر اسرائیلی بمباری کی فوٹیج اور تصاویر پوسٹ کی گئی ہیں۔ ویڈیوز میں دمشق میں زور دار دھماکوں کی آواز سنی جاسکتی ہے۔ادھر شام میں انسانی حقوق کی صورت حال پر نظر رکھنے والے ادارے ‘شامی آبرز ویٹری’ نے کہا ہے کہ اسرائیل نے دمشق کے بین الاقوامی ہوائی اڈہ، دارالحکومت کے جنوب مغرب اور دیگر مقامات پر اسلحہ کے گوداموں پر بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں ایران اور حزب اللہ کے متعدد اسلحہ گودام تباہ کردیے گئے ہیں۔”الحدث” چینل سے بات کرتے ہوئے سیرین آبزر ویٹری کے سربراہ رامی عبدالرحمان نے کہا کہ دمشق کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر کم سے کم دو میزائل داغے گئے۔ چند کلو میٹر دور الکسوہ میں حزب اللہ اور ایران کے اسلحہ کے مراکز پر متعدد میزائل گرائے گئے۔شام کی فوج نے کہا ہے کہ جمعہ کی دیر رات فائر کی گئی زیادہ تر اسرائیلی میزائیلوں کو شام کے فضائی دفاعی نظام نے تباہ کردیا۔آرمی کے بیان میں کہا گیا ہے کہ اسرائیلی لڑاکا طیاروں نے غلیلے پین ہینڈل سے پروازیں کی اور راجدھانی دمشق کے ارد گرد کئی میزائلیں داغی۔ شام کے فضائی دفاعی نظام نے ان میزائلوں میں سے بیشتر کو تباہ کر دیا۔اسرائیل کی طرف سے فائر کی گئی میزائلوں سے صرف دمشق کے انٹرنیشنل ائر پورٹ کے گودام کو نقصان پہنچا ہے۔شام کے سرکاری ٹی وی کے مطابق شام کے فضائی دفاعی نظام نے دمشق پر داغی گئی اسرائیلی کی 8 میزائلوں کو تباہ کر دیا۔ہوائی اڈے کے حکام کی طرف سے بتایا گیا تھا کہ پروازوں میں کسی طرح کا کوئی خلل نہیں پڑا۔

جواب چھوڑیں