قرعہ کے ذریعہ3685 عازمین کا انتخاب

سنٹرل حج کمیٹی آف انڈیا کی جانب سے تلنگانہ کے عازمین حج ( سیزن حج 2019 ) کے انتخاب کیلئے آج حج ہاوز نامپلی میں ضلع واری سطح پر کمپیوٹر ائزڈ طریقہ کار سے قرعہ اندازی عمل میں لائی گئی ۔ اسپیشل آفیسر تلنگانہ اسٹیٹ حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور کی نگرانی میں منعقدہ قرعہ اندازی پروگرام کے ساتھ حج2019 کی سرگرمیوں کا باقاعدہ آغاز ہوگیا ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے پروفیسر ایس اے شکور نے کہا کہ حج2019 کیلئے حکومت سعودی عرب کی جانب سے ہندوستان کیلئے 1,75,000 کا کوٹہ مقرر کیا گیا ہے جس میں 1,25,000 عازمین سنٹرل حج کمیٹی آف انڈیا ( ریاستی حج کمیٹیوں ) کے توسط سے اور ماباقی50,000 عازمین پرائیویٹ ٹور آپریٹرس کے توسط سے سعودی عرب روانہ ہوں گے ۔ انہوںنے مزید کہا کہ تلنگانہ کیلئے4169 حاجیوں کا کوٹہ مقرر کیا گیا جس میں484 عازمین محفوظ زمرہ ( 70 سال سے زیادہ عمر) کے تحت پہلے ہی منتخب قرار دئیے گئے ۔ آج3685 عازمین کا قرعہ اندازی کے ذریعہ انتخاب عمل میںلایا گیا ۔ انہوںنے کہا کہ ریاست سے جملہ12,884 درخواستیں وصول ہوئی تھیں۔سب سے زیادہ درخواستیں شہر حیدرآباد سے8116 اور سب سے کم درخواستیں ضلع محبوب آباد سے صرف4موصول ہوئی تھیں۔ قرعہ اندازی میں ضلع عادل آباد سے76‘ بھدرادری کتہ گوڑم سے54، شہر حیدرآباد سے1459 ، ضلع جگتیال سے 66 ، جنگاؤں سے 15، جئے شنکر بھوپال پلی سے 6 ‘جو گو لامبا گدوال سے 44،کاماریڈی سے82 ، کریم نگر سے66، کھمم سے78، کمرم بھیم آصف آباد سے36، محبوب نگر سے134، محبوب آباد سے4 ، منچریال سے36 ، میدک سے43 ، میڑچل سے 192‘ ناگر کرنول سے45 ، نلگنڈہ سے85 ، نرمل سے 85 ‘نظام آباد سے 249، پداپلی سے40 ، راجنا سرسلہ سے10 رنگاریڈی سے245 ، سنگاریڈی سے 211 ، سدی پیٹ سے49 ، سوریا پیٹ سے53، وقار آباد سے99 ،ونپرتی سے 38 ، ورنگل رورل سے 5، ورنگل اربن سے57 اورضلع بھونگیر یا دادری سے 23 عازمین کا انتخاب عمل میں آیا ۔ پروفیسر ایس اے شکور نے مزید کہا کہ تمام منتخب عازمین کو پہلی قسط کے طور پر 81ہزار روپے جمع کرانا ہوگا ۔ جس کی تاریخ کا عنقریب اعلان کیا جائے گا۔ ہندوستان سے عازمین کی روانگی کا آغاز یکم جولائی سے ہوگا اور یہ سلسلہ13 اگست تک جاری رہے گا عازمین کو دو مرحلوں میں سعودی عرب روانہ کیا جائے گا ۔ پہلے مرحلہ میں عازمین کو مدینہ منورہ روانہ کیا جائے گاجہاں وہ مختصر سے قیام کے بعد مکہ مکرمہ روانہ ہوں گے اور مکہ مکرمہ سے ہی انکی ہندوستان واپسی ہوگی ‘ جبکہ دوسرے مرحلہ کے عازمین مکہ مکرمہ روانہ ہوں گے اور بعد ادائیگی حج، مدینہ منورہ جائیں گے اور وہیں ( مدینہ منورہ ) سے وہ ہندوستان واپس ہوںگے ۔ انہوںنے توقع ظاہر کی کہ تلنگانہ ، آندھر اپردیش اور کرناٹک کے چار اضلاع کے عازمین ( حیدرآباد امبارکیشن پائنٹ) سے روانہ ہونے والے ) سعودی عرب کو دوسرے مرحلہ میں روانہ ہوں گے اور انکا سعودی عرب میں قیام41 تا43 ایام پر محیط رہے گا ۔ پروفیسر ایس اے شکور نے مزید کہا کہ اس بار میں بھی عازمین کی رہائش کو دو طرح زمروں میں تقسیم کیا گیا ہے۔ این سی این ٹی ( نو کوکنگ نو ٹرانسپورٹ) گرین زمرہ کعبہ شریف سے750میٹر تا ایک کیلو میٹر کے فاصلہ پر ہوگا اور دوسرا زمرہ عزیزیہ رہے گا جس میں پکوان کی اجازت رہے گی اور یہ حرم پاک سے7 تا10کیلو میٹر کے فاصلہ پر رہے گا ۔ جہاں سے ہر پانچ منٹ میں حرم پاک کیلئے مفت بس سرویس دستیاب رہے گی ۔ انہوںنے کہا کہ دونوں زمروں کے قیام کے متعلق اخراجات کا تعین ہونا ابھی باقی ہے جبکہ سال گذشتہ گرین زمرہ کیلئے 2,55,500 روپے اور عزیز یہ زمرہ کیلئے2,20,750 روپے رقم مقرر کی گئی تھی ۔ پروفیسر ایس اے شکور نے تمام منتخبہ عازمین کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے سفر مقدس کی تیاریوں کا آغاز کرنے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ بہت جلد حج کمیٹی کی جانب سے عازمین کی تربیت کیلئے حیدرآباد و تمام اضلاع میں تربیتی اجتماعات کے انعقاد کا سلسلہ شروع کیا جائے گا۔قبل ازیں امام وخطیب مسجد حج ہاوز حافظ صابر پاشاہ کی تلاوت قرآن کریم سے پروگرام کا آغاز ہوا ۔ اس موقع پر ذمہ داران تلنگانہ اسٹیٹ حج کمیٹی و درخواست گذاروں کی بڑی تعداد موجود تھی۔

جواب چھوڑیں