کانگریس‘یوپی میں تمام 80 پارلیمانی نشستوں پر الیکشن لڑے گی

کانگریس اترپردیش میں لوک سبھا کی تمام 80نشستوں پر الیکشن لڑے گی۔ پارٹی قائد غلام نبی آزاد نے اتوار کے دن یہ اعلان کیا۔ سماج وادی پارٹی اور بہوجن سماج پارٹی نے کل ہی اترپردیش میں اپنے اتحاد کا اعلان کیاتھا۔ انہوں نے کانگریس کو عملاً صفر نشستیں دی تھیں۔ غلام نبی آزاد نے لکھنو میں اخباری نمائندوں سے کہا کہ ہم اترپردیش میں تمام 80 نشستوں پر لوک سبھا الیکشن لڑیں گے۔ 2009ء کے لوک سبھا الیکشن میں کانگریس یوپی میں جس طرح نمبر ایک پارٹی بن کرابھری تھی اسی طرح 2019ء میں بھی فاتح رہے گی۔ کانگریس قائد نے لکھنو میں پارٹی کے ریاستی دفتر میں میٹنگ کے بعد میڈیا سے بات کی۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے پہلے بھی کہاتھا کہ ہم بی جے پی کو شکست دینے کی خواہاں ہرپارٹی کا ساتھ دینے کے لئے تیار ہیں لیکن ہم ہرایک کو مجبور نہیں کرسکتے۔ ایس پی اور بی ایس پی نے باب بندکردیا ہے لہذا ہم بی جے پی کو شکست دینے کی لڑائی اپنے بل بوتے پر جاری رکھیں گے۔ سماج وادی پارٹی اور بہوجن سماج پارٹی نے اتحاد کا اعلان کرتے ہوئے اتناضرور کہاتھا کہ وہ امیٹھی اور رائے بریلی سے الیکشن نہیں لڑیں گے جو راہول گاندھی اور سونیاگاندھی کے حلقے ہیں۔ پی ٹی آئی کے بموجب سماج وادی پارٹی اور بہوجن سماج پارٹی کے مخالف بی جے پی اتحاد سے عملاً دور کردئیے جانے کے ایک دن بعد کانگریس نے اتوار کے دن اعلان کیا کہ وہ ریاست میں لوک سبھا کی تمام 80 نشستوں پر اپنے بل بوتے پر الیکشن لڑے گی۔ ملک کی قدیم ترین پارٹی نے تاہم امکانی اتحاد کے دراوزے کھلے رکھے اور کہا کہ بی جے پی سے لڑنے کی اہل کوئی بھی سیاسی جماعت جو کانگریس کے ساتھ آناچاہتی ہو آسکتی ہے۔ لکھنو میں اخباری نمائندوں سے خطاب کرتے ہوئے پارٹی جنرل سکریٹری اور انچارج یوپی غلام نبی آزاد نے کہا کہ کانگریس ، اترپردیش میں لوک سبھا کی تمام 80 نشستوں پر الیکشن لڑے گی اور بی جے پی کو شکست دے گی۔ کانگریس نے امیدظاہرکی کہ کانگریس2009ء کے لوک سبھا الیکشن میں جیتی گئی نشستوں کی دگنی تعداد اس بار حاصل کرے گی۔ کانگریس نے سیاسی لحاظ سے اہم ریاست میں اس وقت 21نشستیں جیتی تھیں۔ یہ پوچھے جانے پر کہ آیا ان کی پارٹی کسی سیاسی جماعت سے اتحاد نہیں کرے گی ، غلام نبی آزاد نے کہا کہ اگر کوئی جماعت کانگریس کا ساتھ دیناچاہتی ہے اور کانگریس یہ محسوس کرتی ہے کہ اس پارٹی میں بی جے پی کو ہرانے کا دم خم ہے تو یقیناً کانگریس اُسے اپنے ساتھ لے گی۔ کانگریس کو ایس پی۔ بی ایس پی اتحاد میں جگہ نہ ملنے پر کانگریس جنرل سکریٹری نے کہا کہ ہم چاہتے تھے کہ کانگریس، یوپی میں بی جے پی مخالف مہاگٹھ بندھن کا حصہ بنے لیکن کوئی ہمارے ساتھ چلنا نہیں چاہتا تو کچھ نہیں کیاجاسکتا۔ ایس پی اور بی ایس پی کے ساتھ الیکشن کے بعداتحاد کے بارے میں پوچھنے پر غلام نبی آزاد نے کہاکہ کانگریس تمام سیکولرعلاقائی جماعتوں کا خیرمقدم کرتی ہے۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کانگریس ورکرس کو ایس پی۔ بی ایس پی اتحاد میں عدم شمولیت سے کوئی مایوسی نہیں ہے بلکہ ان کا تو یہ کہنا ہے کہ ریاست میں لوک سبھا کی تمام 80نشستوں پر مقابلہ کیاجائے۔ راشٹریہ لوک دل سے اتحاد کے امکان کے بارے میں پوچھنے پر غلام نبی آزاد نے کہا کہ وہ اس مسئلہ پر میڈیا سے کچھ کہنا نہیں چاہتے۔

جواب چھوڑیں