قرعہ اندازی کے ذریعہ تلنگانہ کے 20 خادم الحجاج کاانتخاب

صدرنشین تلنگانہ اسٹیٹ حج کمیٹی محمد مسیح اللہ خان اور اسپیشل آفیسر ایس اے شکور کے ہاتھوں خادم الحجاج کاقرعہ اندازی کے ذریعہ انتخاب عمل میں آیا ۔ آج دفتر حج کمیٹی میں پراثر تقریب منعقد کی گئی جس میں ہر 200عازمین کے لئے ایک خادم الحجاج کاانتخاب کیاگیا۔ مسیح اللہ خان نے کہاکہ جملہ 24خادم الحجاج کے لئے ریاست بھرسے 238 درخواستیں وصول ہوئی تھیں جن میں سے قرعہ اندازی کے لئے 169 درخواستیں اہل قرارپائیں۔ آج جملہ 20خادم الحجاج کاانتخاب عمل میں لایاگیا ۔ جن میں 18 عام زمرہ کے تحت اورماباقی دوویٹنگ لسٹ کے تحت ہیں۔ ماباقی 4خادم الحجاج میں 2کا انتخاب تلنگانہ اسٹیٹ حج کمیٹی اور ایک کا تلنگانہ اسٹیٹ وقف بورڈ میں سے کیاجائے گا ۔ آج جن خادم الحجاج کاانتخاب عمل میں آیا ان میں جانی میاں‘محکمہ آبپاشی ضلع نلگنڈہ ‘ سہیل محکمہ افزائش مویشیاں حیدرآباد‘ سید امتیاز محکمہ دفاع میڑچل ‘ محمد انور الباقی محکمہ تعلیمات رنگاریڈی‘ محمدعبدالمجیدمحکمہ آبپاشی رنگاریڈی ‘خواجہ مخدوم محی الدین محکمہ تعلیمات کریم نگر ‘شیخ فریدمحکمہ تعلیمات محبوب نگر ‘ صابر خان محکمہ تعلیمات کریم نگر ‘ حبیب الرحمن زبیر محکمہ تعلیمات نلگنڈہ ‘محمدعبدالنعیم محکمہ تعلیمات حیدرآباد‘حیدرعلی خان محکمہ تعلیمات ورنگل اربن ‘خواجہ معین الدین محکمہ تعلیمات جگتیال ‘ عبدالماجد ‘عبدالساجد اورمحمدشفیع اللہ محکمہ تعلیمات ضلع حیدرآباد‘شیخ لیاقت حسین محکمہ پولیس حیدرآباد‘محمدشجاعت اللہ بیابانی محکمہ تعلیمات نلگنڈہ اور عبدالمقتدر صدیقی محکمہ مشن بھاگیرتا ضلع کریم نگر شامل ہیں۔ اس طرح محکمہ تعلیمات سے 12امیدوار خادم الحجاج کے طورپرمنتخب قرارپائے ۔حیدرآباد سے 6‘ نلگنڈہ سے 3‘ کریم نگر سے 3‘رنگاریڈی سے 2‘جگتیال‘ میٹرچل اورمحبوب نگر سے ایک ایک شخص کا بطورخادم الحجاج انتخاب عمل میں لایا ‘قرعہ اندازی کے بعد صحافیوں سے بات کرتے ہوئے مسیح اللہ خان نے کہاکہ عازمین حج کی خدمت بہت بڑا اعزازہے اورانہوںنے تمام منتخب خادم الحجاج سے انتہائی خوش اخلاقی اور خوش اسلوبی کے ساتھ ذمہ داری نبھانے کا مشورہ دیا۔ ساتھ ہی ساتھ انہوںنے فرائض سے پہلوتہی کرنے والوں کے خلاف سخت کاروائی کرنے کا بھی انتباہ دیا۔ قبل ازیں رکن تلنگانہ اسٹیٹ حج کمیٹی حافظ وقاری مولانا لئیق خان قاسمی کی تلاوت قرآن مجید سے قرعہ اندازی کا آغاز ہوا۔ اس موقع پر اراکین حج کمیٹی اوردفتر حج کمیٹی کے ملازمین کی بڑی تعداد موجودتھی۔

جواب چھوڑیں