امریکہ میں ایک اور شٹ ڈاؤن کا امکان : وہائٹ ہاؤس

امریکی وہائٹ ہاؤس کا کہنا ہے کہ اگر 15 فروری تک میکسیکو کی سرحد پر دیوار کی تعمیر کے لیے فنڈنگ کے حوالے سے ڈیموکریٹس کے ساتھ کوئی سمجھوتا نہ ہوا تو ایک نیاحکومتی شٹ ڈاؤن” واقع ہو سکتا ہے۔ واضح رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ امریکا اور میکسیکو کے درمیان سرحد پر دیوار کی تعمیر کے خواہش مند ہیں تا کہ میسکیکو کی جانب سے امریکا میں غیر قانونی دراندازی کو روکا جا سکے۔وہائٹ ہاؤس کے سکریٹری جنرل مک میلفینی نے اتوار کے روز “فو?س ن?وز” نیٹ ورک سے بات کرتے ہوئے کہا کہ “حکومتی شٹ ڈاؤن ابھی تک اصولی طور پر سامنے موجود ہے۔  ہم یہاں تک نہیں پہنچ سکتے مگر ابھی تک یہ آپیشن صدر کے سامنے ہے اور رہے گا۔یاد رہے کہ 25 جنوری کو ایک سمجھوتے کے ذریعے امریکی انتظامیہ کا جزوی طور پر مفلوج ہو جانا اختتام پذیر ہوا تھا۔ پینتیس روز تک جاری یہ امریکا کی تاریخ کا طویل ترین شٹ ڈاؤن تھا۔اس سمجھوتے کے متن میں ہے کہ متعلقہ وفاقی انتظامیاؤں کو 15 فروری تک فنڈنگ فراہم کر دی جائے۔ اس سلسلے میں ریپبلکن اور ڈیموکریٹ پارٹی کی جانب سے مذاکرات کی ذمے دار ٹیم کا کہنا ہے کہ اس بات کی امید ہے کہ مذکورہ ڈیڈ لائن سے قبل کسی معاہدے تک پہنچا جا سکے گا۔

جواب چھوڑیں