سرپور پیپر مل کا احیاء ، ایک اور وعدہ کی تکمیل : کونیرو کونپا

 مشہور سرپور پیپر مل کا گذشتہ ہفتہ احیاء عمل میں لایا گیا ۔ یہ مل چند برسوں سے بند پڑی تھی مگر حکومت کی مساعی کے نتیجہ میں اس مل کا احیاء عمل میں آیا ہے اور اس مل میں کاغذ کی تیاری بھی شروع ہوگئی ۔ کاغذ کی پہلی شیٹ کو کل یہاں ٹی آر ایس کے کارگذار صدر وسابق وزیر کے ٹی آر کے حوالے کی گئی ۔ رکن اسمبلی سرپور کو نیرو کونپا اور فیاکٹری کے نائب صدر میانک جندال نے کل جمعرات کو کے ٹی آر کو فیاکٹری میں تیار کیا گیا پہلا کاغذ پیش کیا اور سرپور پیپر مل کے احیاء کیلئے ممکنہ مساعی انجام دینے پر کے تارک راما راؤ سے اظہار تشکر کیا ۔ کونیرکونپا نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اور کے ٹی آر کی مساعی کے سبب اس فیاکٹری کا احیاء عمل میں آیا ہے۔ انہوںنے کہا کہ فیاکٹری میں 8 فروری سے کاغذ کی تیاری کا عمل شروع ہوگیا ہے جس کیلئے فیاکٹری کے تمام ملازمین اور ورکرس ، ٹی آر ایس حکومت کے مشکور ہیں۔ یہاں اس بات کا تذکرہ ضروری ہے کہ سرپور پیپر مل، تلنگانہ کی ایک اہم اور قدیم فیاکٹری ہے ۔ یہ فیاکٹری چند برسوں تک بند رہی ۔ کانگریس اور تلگودیشم کی پیش رو حکومتیں ، اس مل کے احیاء میں ناکام رہی تھیں۔ اس مل کو دوبارہ کھولتے ہوئے ٹی آر ایس سربراہ وچیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے ایک اہم وعدہ کی تکمیل کردی ہے ۔ حکومت کے اس اقدام پر سینکڑوں ملازمین اور ورکرس نے مسرت کا اظہار کیا ہے۔

جواب چھوڑیں