رابرٹ وڈرا کی 2 مارچ تک گرفتاری نہیں

 دہلی کی ایک عدالت نے انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ (ای ڈی) کے درج کردہ منی لانڈرنگ کیس میں رابرٹ وڈرا کو دیا گیا عبوری تحفظ بڑھادیا یعنی 2 مارچ تک انہیں گرفتار نہیں کیا جاسکتا۔ خصوصی جج اروند کمار نے کانگریس صدر راہول گاندھی کے بہنوئی رابرٹ وڈرا کو یہ عبوری راحت دی۔ ای ڈی نے اپنے وکیل نتیش رانا کے توسط سے کہا کہ وہ وڈرا سے پوچھ تاچھ کرنا چاہتی ہے۔ اس نے اس بنیاد پر ضمانت قبل از گرفتاری کی مخالفت کی کہ رابرٹ وڈرا تحقیقات میں تعاون نہیں کررہے ہیں۔ تاجر نے تاہم اس الزام کی تردید کی اور کہا کہ جب بھی بلایا جائے وہ پوچھ تاچھ کے لئے حاضر ہونے کو تیار ہیں۔ عدالت نے 2 فروری کو انہیں عبوری ضمانت دی تھی جو آج ختم ہوگئی۔ یو این آئی کے بموجب اپنے دفتر کی ضبطی کو اقتدار کا پوری طرح بے جا استعمال‘ انتقامی کارروائی اور سایوں کا تعاقب قراردیتے ہوئے صنعتکار اور کانگریس صدر راہول گاندھی کے بہنوئی رابرٹ وڈرا نے ہفتہ کے دن کہا کہ وہ انصاف کے لئے ڈٹے رہیں گے۔ فیس بک پوسٹ میں انہوں نے کہا کہ مسلسل ہراساں کیا جارہا ہے۔ میرے پاس چھپانے کے لئے کچھ بھی نہیں ہے۔ میں یقینا قانون سے اوپر نہیں ہوں۔ میں نے 6 دن حاضری دی ہے ‘ یومیہ 8 تا 12 گھنٹے۔ 40 منٹ کا لنچ بریک ملتا تھا اور واش روم کو لے جایا جاتا تھا۔ میں نے مکمل تعاون کیا ہے اور قانون کا لحاظ رکھا ہے۔ ملک کے کسی بھی حصہ میں جہاں بلایا گیا وہاں گیا ہوں۔

جواب چھوڑیں