برازیل کے اسکول میں فائرنگ ، مرنے والوں کی تعداد 10 ہوگئی

برازیل کے جنوب مغربی ریاست ساؤ پالو میں بدھ کو ایک اسکول میں فائرنگ کے واقعہ میں مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 10 ہو گئی ہے ۔ بہت سے لوگوں کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے ۔حکام نے بتایا کہ مرنے والوں میں سات طلباء ایک خاتون اور دو حملہ آور شامل ہیں جنہوں نے خود کو جائے حادثہ پر ہی ہلاک کرلیا۔حملہ ساؤ پالو کے میٹروپولیٹن علاقے کے جارڈم امپیروڈور میں واقع راؤل براسل پبلک اسکول میں مقامی وقت کے مطابق صبح 9:30 بجے کیا گیا۔ابتدائی رپورٹوں میں کہا گیا کہ حملے میں آٹھ افراد ہلاک ہو گئے . بعد میں مرنے والوں کی تعداد بڑھ گئی کیونکہ حملے میں زخمی ہونے والے 17 افراد میں سے دو نے علاج کے دوران اسپتال میں دم توڑ دیا۔حملہ آوروں نے آتشیں ہتھیار اور چھری کا استعمال کیا۔ فائرنگ کے تبادلے کے دوران بھگدڑ مچ گئی کیونکہ خوفزدہ طالب علم جان بچانے کے لئے ادھر ادھر دوڑ رہے تھے ۔عینی شاہدین کے مطابق دو حملہ آوروں کے کیبل کے ایک بڑے بنڈل کو لے کر اسکول کے احاطے میں داخل ہونے کی اطلاع اور اس میں دھماکہ خیز مادے کے خدشہ کے پیش نظر بم ڈسپوزل دستہ کو اسکول بھیجا گیا۔سرپرست اور پڑوسی واقعہ کے بارے میں جاننے کے لئے بے چین ہیں ،وہ سبھی اسکول پہنچ گئے تھے ۔ساؤ پالو کے گورنر جوآؤ اوڈوریا نے جائے وقوعہ پر صحافیوں کو بتایا‘‘ یہ میری زندگی میں اب تک کے سب برے منظر ہیں، ابھی یہ ہماری ترجیحات میں ہیں ہے کہ متاثرین اور ان کے خاندانوں کا ساتھ دیا جائے ’’۔فوجی پولیس کے ترجمان سبیل دا سلوا نے کہا کہ بہت سے لوگ زخمی تھے جنہیں دو علاقائی اسپتالوں میں داخل کرایا گیا ہے جس میں کچھ کی حالت نازک ہے ۔

جواب چھوڑیں