برطانوی ممبران پارلیمنٹ نے بغیر معاہدہ بریگزٹ کی تجویز مسترد کردی

برطانوی ممبران پارلیمنٹ نے یوروپی یونین (ای یو) سے بغیر کسی سمجھوتہ کے باہر نکلنے (بریگزٹ ) کی تجویز کو مسترد کر دی جس سے حکومت کو ایک گھنٹے سے کم وقت میں دوسری بار شکست کا سامنا کرنا پڑا۔برطانوی ممبران پارلیمنٹ نے بغیر کسی سمجھوتہ کے یوروپی یونین سے باہر نکلنے کی تجویز کو مسترد کرنے کے اپنے فیصلے کی تصدیق کرنے کے لئے 278 کے مقابلے 321 ووٹ دیئے یعنی ممبران پارلیمنٹ کے حق میں 43 ووٹ مزید پڑے ۔ممبران پارلیمنٹ نے اس تجویز کو بھی 210 ووٹوں کے فرق سے مسترد کر دیا جس میں برطانوی حکومت نے یوروپی یونین سے بغیر کسی سمجھوتہ کے باہر جانے کے معاملہ کو 22 مئی تک ٹالنا چاہ رہی تھی۔محترمہ مئے نے ارکان پارلیمنٹ کو خبردار کیا کہ اگر وہ ان کی(محترمہ مئے ) بریگزٹ معاہدہ کی حمایت کرنے کے لئے تیار نہیں ہیں تو بریگزٹ معاہدہ میں بہت تاخیر ہو گی۔برطانوی حکومت کو بدھ کی رات چار ووٹوں سے شکست کا سامنا کرنا پڑا کیونکہ ممبران پارلیمنٹ نے غیر بائنڈنگ ووٹ میں بغیر معاہدہ کے یورپی یونین سے باہر نکلنے کی تجویز کو مسترد کر دیا جو 29 مارچ کو برطانیہ کو یوروپی یونین چھوڑنے سے انکار نہیں کرتا۔

جواب چھوڑیں