شاہ رخ کے رائیڈرس نے جیت کے ساتھ مہم شروع کی

کولکتہ کے ایڈن گارڈن میدان پر جب کولکتہ نائیٹ رائیڈرس کے لئے سب کچھ ختم دکھائی دے رہا تھا کہ تبھی آندرے رسل کی شکل میں کیریبین طوفان اٹھا جس میں سن رائزرس حیدرآباد کی امیدیں اڑ گئیں۔ رسل نے محض19گیندوں پر ناٹ آوٹ49رن کی کرشمائی اننگز کھیل کر کولکتہ کو دو گیند باقی رہتے چھ وکٹ سے حیرت انگیز جیت دلا دی۔حیدرآباد نے آسٹریلیا کے خطرناک اوپنر ڈیوڈ وارنر کی 85رن کی زبردست اننگز تین وکٹ پر181رن کا مضبوط اسکور بنایا۔ کولکتہ نے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے15.3اوور میں اپنے چار وکٹ118رن پر گنوا دیئے تھے لیکن رسل نے19گیندوں میں چار چوکے اور چار چھکے اڑاتے ہوئے ناقابل شکست49 رنز بنائے اور کولکتہ کو فتح دلا دی۔شبھمن گل نے صرف 10گیندوں پر دو چھکے اڑا کر ناٹ آؤٹ18رن بنائے اور کولکتہ کے لئے جیت کاچھکا مارا۔ کولکتہ نے19.4اوورس میں چار وکٹ پر183رن بنا کر جیت اپنے نام کی۔رسل اور گل نے پانچویں وکٹ کے لئے صرف25گیندوں میں65رن کی ناٹ آؤٹ ساجھے داری کی۔ حیدرآباد کی ڈیتھ اوورس کی بولنگ کافی خراب رہی۔ حیدرآباد نے18ویں اوور میں 19 رن29ویں اوور میں21رن اور20ویں اوورمیں14 دے کر ہار کو گلے لگا لیا۔آندرے رسل نے18ویں اوور میں سدھارتھ کی گیندوں پر مسلسل دو چھکے اڑا کر میچ میں اچانک مہم جوئی پیدا کر دی۔رسل نے پانچویں گیند پر چوکا مارا۔ اس اوور میں19رن پڑے اور اب کولکتہ کو آخری دو اوور میں 34رن چاہئے تھے ۔ رسل کا کرشمہ جاری تھا اور انہوں نے 19ویں اوور میں بھونیشور کمار کی پہلی تین گیندوں پر 4،6،4جڑ دیا۔ایڈن گارڈن میں ناظرین کا شور اب آسمان کو چھو رہا تھا۔رسل نے پانچویں گیند پر چھکا اڑا دیا اور ان کے اور شبھمن گل کے درمیان50رن کی شراکت محض20 گیندوں میں مکمل ہو گئی جس میں گل کی شراکت محض چھ رن تھی۔ کولکتہ کو آخری اوور میں13رن چاہئے تھے اور گیند شکیب کے ہاتھوں میں تھی۔ شکیب کی پہلی گیند وائڈ تھی اور دوسری گیند پر ایک رن بنا۔ گل نے تیسری گیند پر لانگ آن کے اوپر سے چھکا مار دیا اور پھر چوتھی گیند پر چھکا مار کر میچ ختم کر دیا۔اس سے قبل آسٹریلیا کے خطرناک اوپنر ڈیوڈ وارنر نے دھماکہ خیز واپسی کرتے ہوئے85رن کی زبردست اننگز کھیلی جس کی بدولت سن رائزرس حیدرآباد نے کولکتہ نائیٹ رائیڈرس کے خلاف تین وکٹ پر 181 رن کا مضبوط اسکور بنا لیا۔

جواب چھوڑیں