تلنگانہ میں کے سی آر کٹس کی دھوم

تلنگانہ میں سرکاری ہاسپٹلوں میں زچگیوں کی شرح میں اضافہ کے لئے چیف منسٹر کے چندرشیکھر راو ، جن کو ‘کے سی آر’بھی کہا جاتا ہے ،کے نام سے نوزائیدہ بچوں کی دیکھ بھال کے لئے فراہم کی جانے والی اشیا پر مشتمل کے سی آرکٹس کی ان دنوں دھوم مچی ہوئی ہے کیونکہ ان کٹس کے ساتھ ساتھ لڑکی یا لڑکے کی سرکاری ہاسپٹل میں پیدائش پر دی جارہی رقمی امداد کے سبب سرکاری ہاسپٹلوں میں حالیہ چند عرصہ کے دوران زچگیوں کی شرح میں قابل لحاظ اضافہ ہوگیا ہے ۔اس اسکیم کے آغاز سے لے کر اب تک اس پر جملہ 350کروڑروپئے کے مصارف عائد ہوئے ہیں۔حکام کی جانب سے کٹس کی خریداری پر 50کروڑ روپئے خرچ کئے گئے ہیں۔کٹس کی فراہمی کے ساتھ ساتھ لڑکے کی پیدائش پر حکومت کی جانب سے 12,000 روپئے اور لڑکی کی پیدائش پر 13000روپئے دیئے جارہے ہیں۔اس اسکیم کا انوکھا پہلو مالیاتی قدم بھی ہے ۔حکومت کی جانب سے حاملہ خاتون کے سرکاری ہاسپٹل میں آنے کے بعدپانچ اقساط میں اس کے بینک اکاونٹ میں رقم ڈالی جارہی ہے ۔حکومت کی جانب سے حاملہ خواتین کے لئے 350کروڑ روپئے بھی جاری کئے گئے ہیں۔تاحال اس اسکیم کے تحت 4.5لاکھ کٹس تقسیم کئے گئے ہیں ۔ان میں نوزائیدہ بچہ کی دیکھ بھال کی 16اشیا، ماں کے لئے ساڑیاں،نوزائیدہ کیلئے ٹی شرٹس، کھلونا ، توال ، بے بی میٹریسس ،بے بی کٹ ، بے بی پاوڈر،تیل ، صابن وغیرہ شامل ہیں۔

جواب چھوڑیں