ای ایس آئی ہاسپٹلوں میں دوائوں کی خریدی‘ 200 کروڑ کااسکام

تلنگانہ کے ویجلنس اینڈانفورسمنٹ نے ریاست کے ای ایس آئی ہاسپٹلوںمیں دوائوں کی خریدی میں 200کروڑروپے کے اسکام کاپتہ چلایاہے۔ ای ایس آئی ہاسپٹلوں کیلئے زائدقیمت پر دوائیں خریدنے کااسکام منظرعام پر لایا ہے ۔ محکمہ ویجلنس و انفورسمنٹ کے عہدیداروں کے بموجب مالیاتی سال2017-18 اور 2018-19 کے درمیان ای ایس آئی ہاسپٹلوں میں دواوںکی سپلائی کیلئے مختلف فرمس کو کنٹراکٹ دیاگیا۔انفورسمنٹ کے عہدیداروںنے ڈائرکٹرای ایس آئی ڈاکٹر سی دیویکارانی اور دیگر 5افراد کیخلاف تحقیقات کا آغاز کردیا ہے جومبینہ طورپراس اسکام میںملوث بتائے گئے ہیں۔ ڈاکٹر دیویکارانی پرالزام ہے کہ انہوں نے بے نامی فرمس (کمپنیوں) کے نام رقومات منتقل کی تھیںاور یہ بھی دعویٰ کیا گیاہے کہ ادویات کی سپلائی کے بغیر کروڑہاروپے کے بلزبھی ادا کئے گئے ۔ ای ایس آئی نے زیادہ قیمت پرکئی دوائیں خریدی گئی ہیں۔ لاکٹولوس 200ایم ایل ٹانک کی قیمت فی بوتل 74روپے 20پیسے ہے مگرای ایس آئی میںاس ایک باٹل کو 260 روپے میں خریداگیا۔ بتایاجاتاہے کہ فون پر دوائوں کا آرڈردیاگیا۔اطلاعات کے مطابق تحقیقات کے دوران دوائیںخریدنے کے عمل کاجائزہ لینے والی کمیٹی بھی فرضی نکلی ۔جانچ کے دوران اس کمیٹی کا کوئی پتہ نہیں چلایا ۔بتایا جاتاہے کہ ٹنڈرکے دوران تمام تین کوٹیشن کوقبول کرلیاگیا جوایک ہی کمپنی کے تھے۔

جواب چھوڑیں