ٹوکیو اولمپکس میں میڈلس کے تمام ریکارڈز توڑیںگے:رجیجو

حکومت نے ٹوکیو اولمپک 2020 میں پہلے کے مقابلے زیادہ میڈلس جیتنے کی امید ظاہر کرتے ہوئے کہاکہ ہندوستانی کھلاڑیوں کی سہولت اور دیسی کھانوں کیلئے حکومت جاپان میں انڈیا سنٹر کھولے گی اور ملک میں بھی کھلاڑیوں کیلئے تغذیہ بخش غذا کا پورا انتظام کریگی۔ کھیل اور نوجوانوں کے امور کے وزیر کرن رجیجو نے اپنی وزارت سے متعلق مطالبات زر پر بحث کا جواب دیتے ہوئے یہ بات کہی۔ ایوان نے مطالبات زر کو صوتی ووٹ سے منظور کرلیا۔ رجیجو نے کہاکہ آئندہ برس جاپان میں اولمپک کھیلوں کا انعقاد کیا جائے گا۔ کسی بھی ملک کیلئے، دنیا میں کھیلوں کے معاملے میں مقام اہم ہوتا ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی کے دل میں کھلاڑیوں سے ملنے اور ان کی حوصلہ افزائی کیلئے خاص جگہ ہے۔ انہوں نے کہاکہ 2020 کے اولمپکس سے ایک سال پہلے ہی ہندوستان اپنے کھلاڑیوں کو پریکٹس کیلئے جاپان بھیجے گا اور وہاں ایک انڈیا سنٹر قائم کرے گا جہاں کھلاڑیوں کی سہولت کے ساتھ ساتھ ان کو ہندوستانی کھانے دینے کا بھی انتظام کیا جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ وہ میڈلس کی تعداد کے بارے میں کوئی پیشن گوئی نہیں کریںگے لیکن اتنا ضرور کہہ سکتے ہیں کہ پہلے کے سارے ریکارڈ ٹوٹ جائیں گے ۔ وزیر اسپورٹس نے ملک میں بھی کھلاڑیوں کی تربیت کا ذکر کرتے ہوئے کہاکہ حکومت نے فیصلہ کیاہے کہ اتھلیٹکس اور کشتی جیسے جسمانی دم خم والے کھلاڑیوں کیلئے تغذیہ بخش غذا کی حد ختم کردی جائیںگی اور اب ہر کھلاڑی کو اس کی صلاحیت کے حساب سے کھانے پینے کی آزادی ہوگی اور یہ سارے اخراجات حکومت اٹھائے گی۔ رجیجو نے مزید کہاکہ ملک میں کھیلو انڈیا پروگرام میں4000 باصلاحیت کھلاڑیوں کا انتخاب کیاگیاہے اور ان کی تربیت بھی شروع ہوگئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ حکومت اس سال 29 اگست کو میجر دھیان چند کی سالگرہ کے موقع پر بڑے پروگرام کا انعقاد کرے گی۔ مرکزی وزیر نے کہاکہ کھیل ریاستی موضوع ہوتاہے اور مرکزی حکومت کمی کے وقت فنڈز کی تکمیل کرتی ہے۔ مرکز کے پاس پیسے کی کوئی کمی نہیں ہے۔ انہوں نے ارکان پارلیمنٹ کو مشورہ دیاکہ وہ اپنے انتخابی حلقوں میں کھیلوں کی سہولیات کیلئے مرکز سے براہ راست مطالبہ کرنے کی بجائے ریاستی حکومتوں سے بات کرکے پیشکش کریں۔ انہوں نے کہاکہ وہ آئندہ ایک ماہ کے دوران کارپوریٹ دنیا کے لوگوں سے ملیں گے اور انہیں کھیلوں سے وابستہ کرکے کھلاڑیوں اور کھیل اداروں کو پیسے کی کمی نہیں ہونے دیںگے۔ انہوں نے کہاکہ اسپورٹس اتھارٹی آف انڈیا کے 282 مراکز اور ذیلی مراکز کو ہندوستانی فوج اور مرکزی نیم فوجی دستوں کے ساتھ ہم آہنگی قائم کرکے کھیلوں کی ثقافت تیار کی جائے گی تاکہ عالمی معیار کے کھلاڑی پیدا کئے جاسکیں ۔ کھیل اداروں کے کاموں کے بارے میں تبصرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ ہم حکومت میں کنٹرول کرنے نہیں حمایت اور تعاون کرنے آئے ہیں۔ کھیل میں سیاست نہیں ہونی چاہئے۔ وزیر کھیل نے کہاکہ سووچھ بھارت ابھیان کے تحت ان کے محکمہ نے فیصلہ کیا ہے کہ ملک کے تمام اسپورٹس کامپلیکس، اسٹیڈیم اور تربیتی مراکز صاف ستھرے اور سرسبز بنائے جائیں گے۔ وہ خود 6 ماہ میں ان اسپورٹس کامپلکس کا دورہ کریں گے اور اگر کہیں کوئی کمی پائی جائے گی تو وہ انچارج کے خلاف کارروائی کریں گے۔ کھیل فیڈریشنوں کے بارے میں انہوں نے کہاکہ کچھ لوگوں کو لگتاہے کہ کھیل فیڈریشنوں میں سیاست سے وابستہ لوگ آگئے اور انہوں نے کھیلوں کو برباد کردیاہے۔ ایسا کہنا سراسر ا غلط ہے۔ کھیل فیڈریشنوں میں کچھ لوگ سیاست کے ہوسکتے ہیں لیکن زیادہ تر لوگ اس شعبہ کے ماہر ہیں۔ انہوں نے کھیلوں کیلئے کام کئے ہیں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *