کانگریس‘ منتخب عوامی نمائندوں کو سنبھال کر رکھنے میں ناکام: کے سی آر

چیف منسٹر کے چندرشیکھرراؤ نے اسمبلی میں آج کانگریس کے احتجاجی ارکان کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ کانگریس کے12ارکان اسمبلی کا ٹی آرایس میں انضمام قانون کے عین مطابق ہے۔ آئین کے 10 ویں شیڈول کے مطابق 12 ارکان اسمبلی کو ٹی آرایس میں شامل کیاگیا ہے۔ چیف منسٹر کے سی آر نے کانگریس کے ارکان سے واضح طورپر کہا کہ آپ لوگ پارٹی کے منتخب عوامی نمائندوں کو سنبھال نہیں سکے وہ کچھ نہیں کرسکتے۔ جب کانگریس کے ارکان ہم سے رجوع ہوئے اور کہا کہ وہ ٹی آرایس میں شامل ہوناچاہتے ہیں تو ہم نے پارٹی میں ان کا خیرمقدم کیا ہے۔ انہوں نے دعویٰ کیاکہ عوام نے اسمبلی انتخابات میں ٹی آرایس کو تین تہائی اکثریت دلائی ہے۔ منڈل پریشد اورگرام پنچایت الیکشن میں ٹی آرایس کے 95 فیصد امیدوار منتخب ہوئے ہیں اور 32 ضلع پریشد کے صدور ونائب صدور کے عہدوں پر حکمراں جماعت کے امیدواروں نے قبضہ کیا ہے۔ ان حالات میں ٹی آرایس کو دیگر جماعتوں کے ارکان اسمبلی کو انحراف کی حوصلہ افزائی کرنے کی کوئی ضرورت نہیں۔چیف منسٹر نے دعویٰ کیاکہ ملک کی ہر ریاست میں کانگریس پارٹی کے منتخب عوامی نمائندے پارٹی چھوڑرہے ہیں۔ انہوں نے پوچھا کہ گوا میں کیا ہوا ہے؟ جہاں کانگریس کے 10 ارکان، بی جے پی میں شامل ہوگئے۔ آندھراپردیش میں ٹی ڈی پی کے 4 ارکان راجیہ سبھا نے بی جے پی میں شمولیت اختیارکرلی۔ یہ سب قانون کے مطابق ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 12ارکان اسمبلی کو ٹی آرایس میں شامل کراتے ہوئے ہم نے قانون کی کوئی خلاف ورزی نہیں کی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *