پائلٹوں کی ہڑتال‘ برٹش ایرویز کی 100 فیصد پروازیں منسوخ

برٹش ایرویز بی اے نے پیر کے دن بتایا کہ وہ پائلٹوں کی ہڑتال کے پہلے دن برطانیہ کے ایرپورٹس سے اپنی تمام پروازیں منسوخ کرنے پر مجبور ہوگئی ہے۔ ایرلائن نے کہا کہ ہم نے تنخواہ کا مسئلہ حل کرنے کئی ماہ کوشش کی۔ وہ برٹش ایرلائن پائلٹس اسوسی ایشن (بی اے ایل پی اے) سے بات چیت کے لئے ابھی بھی تیار ہے۔ ہمیں پتہ ہی نہیں کہ کونسا پائلٹ ہڑتال پر ہے۔ ہم یہ بھی اندازہ نہیں لگاسکتے کہ کتنے پائلٹ کام پر آئیں گے۔ اسی لئے ہمارے پاس اپنی لگ بھگ 100 فیصد پروازیں منسوخ کردینے کے سوا اور کوئی چارہ نہیں۔ برطانیہ کی ایرلائن اور اس کے 4300 پائلٹس میں 9 ماہ سے تنخواہ کا جھگڑا چل رہا ہے۔ لگ بھگ 3لاکھ لوگوں کے سفری منصوبے درہم برہم ہوگئے ہیں۔ پائلٹس نے منگل کو بھی ہڑتال جاری رکھنے کی بات کہی ہے۔ انہوں نے مزید ایک دن 27 ستمبر کو ہڑتال کی دھمکی دی ہے۔ ایرلائن نے جولائی میں 11.5 فیصد تنخواہ بڑھانے کی بات کہی تھی لیکن پائلٹس نے اسے مسترد کردیا تھا۔ آئی اے این ایس کے بموجب برٹش ایرویز لگ بھگ 100 فیصد فلائٹس منسوخ کرنے پر مجبور ہوگئی ہے کیونکہ پائلٹوں نے دو روزہ ہڑتال کردی ہے۔ ای ایف ای نیوز کے بموجب برطانیہ کی سرکاری ایرلائن روزانہ 850 پروازیں چلاتی ہے۔ پروازیں منسوخ ہونے سے یومیہ لگ بھگ 1 لاکھ 45 ہزار مسافرین متاثر ہوں گے۔ نیویارک ‘ دہلی‘ ہانگ کانگ اور جوہانسبرگ پروازیں متاثر ہوئی ہیں ۔ مسافرین کو پورا کرایہ واپس کرنے‘ دوسری ایرلائن کے ذریعہ سفریا بعد کی تاریخ میں سفر کا آپشن دیا گیا ہے۔ مسافرین سے یہ بھی کہا گیا ہے کہ فلائٹ کنفرم نہ ہو تو وہ ایرپورٹ آنے کی زحمت نہ کریں۔ برٹش ایرویز کو ایک دن کی ہڑتال سے اس کے بموجب 40 ملین پاونڈس (49 ملین امریکی ڈالر) کا نقصان ہوگا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *