اترکھنڈ میں ڈینگو کے کیسس میں اضافہ۔دہرہ دون کا ایک مشہور اسکول بند کردیا گیا

اترکھنڈ میں ڈینگو کے کیسس میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ ریاست کے ڈائرکٹوریٹ آف ہیلتھ سرویسس کے ایک عہدیدار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا ہے کہ کہیں افراد اس مہلوک مرض سے مبتلا ہوتے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ متاثرہ افراد کی تعداد ہزاروں میں ہوسکتی ہے۔ اگرچیکہ سرکاری طور پر مذکورہ مرض کے کیسس کی تعداد میں بتائی گئی ہے لیکن غیر سرکاری طور پر کہا جارہا ہے کہ ایک ہزار سے زائد افراد مذکورہ مرض میں مبتلا ہیں۔ چیف میڈیکل آفیسر ایس کے گپتا نے کہا کہ وبائی امراض کی روک تھام کے لئے مؤثر اقدامات کئے جارہے ہیں۔ اس سلسلہ میں اسکولس میں بھی مہم چلائی جارہی ہے۔ بلدیہ کے عہدیداروں کی جانب سے باقاعدگی سے مچھرکش ادویات کا چھڑکائو کیا جارہا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ شہر تمام دواخانوں میں ڈینگو کے مریض شریک ہیں اور مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ دواخانوں میں مریضوں کے لئے خاطر خواہ انتظامات کئے جارہے ہیں۔ اس کے باوجود صورتحال تشویشناک ہوتی جارہی ہے۔ دہرادون کے ایک مشہور اسکول کو ڈینگو کے کیسس میں اضافہ کے پیش نظر بند کردیا گیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ پولیس کے عہدیدار اور جوان بھی دارالحکومت میں بھی ڈینگو سے متاثر ہوگئے ہیں۔ دہرادون کے میئر سنیل اونیال نے کہا کہ وبائی امراض کی روک تھام کے تعلق سے بیداری مہم چلائی جارہی ہے اور کیمپس کا قیام عمل میں لایا جارہا ہے۔ سرکاری طور پر کیس کے تعلق سے ڈیٹا نہیں دیا گیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *