کولکتہ کے صرف ایک وارڈ میں ڈینگو کے 50مریض

کلکتہ میونسپل کارپوریشن کے وارڈ نمبر 99میں گزشتہ چند دنوں میں 50افراد ڈینگو سے متاثر پائے گئے ہیں۔اس وارڈ کے رام گڑھ، ودیا ساگر کالونی اور رائے پور منڈال پار ہ سب سے زیادہ متاثر ہے ہے ۔مانسون کے بعد سے ہی کلکتہ کے مختلف علاقوں میں مچھر کانٹنے کی وجہ سے ہونے والی بیماریوں سے متاثر ہونے کا سلسلہ شروع ہوجاتا ہے ۔کلکتہ میونسپل کارپوریشن کے ذرائع کے مطابق گزشتہ سال علی پور، گلف گرین، جودھ پارک، جادو پور اور بھاگا جتن میں ڈینگو کے 150سے زایدمریض کی شناخت کی گئی تھی۔کلکتہ میونسپل کارپوریشن کے ڈپٹی میئر اور صحت کے شعبے کے انچارج اتین گھوش نے کہا کہ اس سال بھی کارپوریشن نے بڑے پیمانے پر بیداری مہم چلائی تھی اور لوگوں سے اپیل کی تھی اپنے آس پاس صفائی کا اہتمام کریں اور پانی جمع نہیں ہونے دیں۔ انہوں نے کہا کہ کارپوریشن صفائی پر توجہ دے رہی ہے مگر شہریوں کو بھی اس کا خیال رکھنا ہوگا اور کارپوریشن کے ساتھ تعاون کرنا ہوگا۔ وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے اسمبلی میں کہا تھا کہ اس سال5 ستمبر تک17افراد کی ڈینگو کی وجہ سے موت ہوگئی ہے ۔کم وبیش 10,500افراد ڈینگو سے متاثر ہوئے ہیں۔وزیرا علیٰ نے کہا تھا کہ ڈینگو سے بچنے کیلئے ہر ایک کو مثبت رول ادا کرنے کی ضرورت ہے ۔اور اس پرسیاست کی ضرورت نہیں ہے ۔کلکتہ میونسپل کارپوریشن نے ڈینگو سے متعلق بیداری پیدا کرنے والے درگا پوجا کمیٹیوں کو انعامات سے نوازنے کا فیصلہ کیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ گزشتہ سال 80پوجا کمیٹیوں کو سواتھا بندھاب سرد سمان سے نوازا گیا ہے اس سال150پوجا کمیٹیوں کو ایوارڈ سے نوازا جائے گا۔ڈپٹی میئر اتین گھوش نے کہا کہ درگا پوجا کے ختم ہونے کے بعد ڈینگو کے کیس میں اضافہ ہوجاتا ہے ۔ان حالات کو ذہن میں رکھتے ہوئے ہم نے بیداری مہم میں پوجا کمیٹیوں کو شامل کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *