حیدرآباد کو انیمیشن صنعت میں اہم مقام حاصل: کے ٹی آر

ریاستی وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی کے ٹی راما راؤ نے کہا کہ دنیابھر میں حیدرآباد کو انیمیشن صنعت میں مرکزی حیثیت حاصل ہے۔ آج حیدرآباد انٹرنیشنل کنونشن سنٹر میں انڈیا’جوائے‘ پروگرام کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حیدرآباد میں عالمی شہرت یافتہ فلم اسٹوڈیوز موجود ہیں جس کی وجہ سے فلم سازی کے لئے حیدرآباد ایک اہم مرکز کے طور پر ابھرا ہے۔ اس شہر میں وی ایف ایکس، گینگ اور انیمیشن شعبہ میں کروڑہا روپئے کا کاروبار ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انیمیشن کے بعد فلم سازی کا معیار مزید بلند ہوگیا۔ فلم سازی کے عمل میں وی ایف ایکس کی اہمیت بڑھ گئی ہے۔ باہوبلی، ایگا اور مگادھیرا جیسی فلمیں، فلمی صنعت پر گہرا اثرچھوڑی ہیں۔ وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی نے کہا کہ دنیابھر میں 2.3 بلین کارکرد گیمرس موجود ہیں۔ ہرسال گیمنگ صنعت میں25 فیصد فروع حاصل ہورہا ہے۔ اس شعبہ سے 250 کروڑ روپئے آمدنی ہوئی ہے ۔توقع ہے کہ 2020 تک آمدنی ‘ تین گنا بڑھ جائے گی۔ کے ٹی راما راؤ نے کہا کہ شہرحیدرآباد میں 1000 کروڑ روپئے کا سرمایہ مشغول کرتے ہوئے امیج ٹاورس کی تعمیر جاری ہے اور امکان ہے کہ 2021 یا 2022 میں امیج ٹاورس کا افتتاح عمل میں لایاجائے گا۔ گیمنگ اور تفریحی صنعت کے لئے حکومت کی جانب سے مراعات دینے کا اعلان کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ انڈیا جوائے پروگرام کے ذریعہ ریاست میں گیمنگ اینڈمیڈیا سیکٹر کو فروغ دیاجائیگا۔ تلنگانہ کو انیمیشن اور گیمنگ کے لئے بہترین مرکز میں تبدیل کردیاجائے گا۔ کے ٹی آر نے کہا کہ 16لاکھ مربع فٹ اراضی پرعالیشان امیج ٹاورس تعمیر کئے جارہے ہیں جس میں ایم او سی اے پی، اسٹوڈیوز، گرین میاٹ اسٹوڈیوز‘ ساؤنڈ اور ایکولیٹرک اسٹوڈیو‘ کلرکوڈنگ، ڈاٹا سنٹر، سافٹ ویر سرویسیس اور دیگر عصری سہولتیں دستیاب رہیں گی۔ یہ امیج ٹاورس، تخلیقی صنعت کے لئے ٹکنالوجی پاورہاؤز ثابت ہوں گے جہاں ایک چھت تلے انیمیشن ، گیمنگ اور آئی وی ایکس یونٹس رہیں گے۔ ایک ہزار کروڑ روپئے کے مصارف سے ان ٹاورس کے تعمیری کام انجام دئیے جارہے ہیں اور یہ کام پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کی اساس پر انجام دئیے جارہے ہیں۔اس موقع پر فلم اداکارہ نمرتا شیروڈکر‘ فلم ساز الواروند‘ پی ومشی ودیگر موجود تھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *