تلنگانہ میں لاک ڈاون پر سختی سے عمل‘ کریم نگر پر خصوصی نظر

تلنگانہ بھرمیں لاک ڈاون پر سختی سے عمل کیاجارہا ہے ۔کریم نگر جہاں پر انڈونیشیائی مبلغین کورونا وائرس سے متاثر پائے گئے میں کافی احتیاط کیاجارہا ہے ۔اس ضلع میں بھی کامیابی کے ساتھ لاک ڈاون پر عمل کیاجارہا ہے ۔ضلع کے عوام اپنے گھروں میں محدود ہیں اور احتیاطی اقدامات کررہے ہیں جبکہ ضلع کی سڑکیں سنسان منظر پیش کررہی ہیں۔ضلع میں 16چیک پوسٹ بنائے گئے ہیں۔750ملازمین پولیس کو ضلع میں تعینات کیاگیا ہے ۔ضلع میں دوسرے علاقوں سے آنے والوں کو روکنے کو یقینی بنانے کے لئے پکٹنگ بھی کی گئی ہے ۔ضلع کی ساتاواہنا یونیورسٹی میں الگ تھلک مرکز بنایاگیا ہے ۔ضلع میں گزشتہ 8دنوں سے لوگوں میں بیداری پیداکرتے ہوئے ان کو گھروں میں رہنے کی ہدایت دی جارہی ہے ۔صرف ضروری اشیا اور راشن کی خریداری کرنے والے ہی سڑکوں پر نظر آرہے ہیں اور دکانات پر سماجی فاصلہ بنایاجارہا ہے ۔ضلع کی ڈی مارٹ مال جہاں پر ضروری اشیا فروخت کی جاتی ہیں میں داخل ہونے سے پہلے لوگوں کو سینی ٹائزر سے ہاتھ دھونا پڑرہا ہے ۔پولیس کی جانب سے ڈرون کیمرون کا بھی استعمال کیاجارہا ہے تاکہ لوگوں پر نظر رکھی جاسکے ۔ضلع کے مکرم پورہ اور کشمیر گڈہ علاقوں پر خصوصی نظر رکھی جارہی ہے ۔موبائل مارکٹس بناتے ہوئے سبزیوں کی فروخت کو یقینی بنایاگیا ہے ۔حیدرآباد میں لاک ڈاون کے موقع پر پولیس پر حملہ کرنے والے 8افراد کو گرفتار کرلیاگیا۔لاک ڈاون کے موقع پر ان افراد نے صنعت نگر علاقہ میں پولیس ملازمین سے بحث وتکرار کرتے ہوئے ان پر ہفتہ کو حملہ کیا تھا۔یہ ملازمین پولیس وینکٹیشورلو سب انسپکٹر،کانسٹیبل نوین کمار اور دیگر لاک ڈاون کی ڈیوٹی کررہے تھے ۔جب ان ملازمین پولیس نے سڑک پر جمع ان افراد کوگھروں کو جانے کی ہدایت دی تو ان افراد نے پولیس ملازمین سے نہ صرف بحث وتکرار کی بلکہ ان پر حملہ کردیا۔اس حملہ کے نتیجہ میں کانسٹیبل نوین کمار کو فریکچر آگیا اور اندرونی چوٹیں بھی آئیں۔کانسٹیبل کی شکایت کی بنیاد پر صنعت نگر پولیس نے تعزیرات ہند کی مختلف دفعات کے تحت معاملہ درج کرکے ان کو گرفتار کرلیا۔پولیس نے کہا کہ یہ حملہ آور چھوٹے تاجرہیں۔

گوشت کی قیمتوں میں اضافہ کیخلاف انتباہ۔خاطی دکانداروں کیخلاف کارروائی کی جائے گی: تلاسانی

’’نیوز ایٹم حیدرآبادیوں کی ترجیح غذا مٹن اب انہیں دستیاب نہیں رہے گی‘‘ جس پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے وزیر ڈیری ڈیولپمنٹ افزائش مویشیاں اور سمکیات تلاسانی سرینواس یادو نے گوشت کی بہت زیادہ قیمت پر فروخت پر گوشت کی دکانات کے مالکین پر سخت تنقید کی جو لاک ڈائون کا استحصال کر رہے ہیں۔ انہوں نے سرکاری عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ گوشت کی دکانات کے خلاف خصوصی مہم شروع کرتے ہوئے اگر وہاں زیادہ قیمتوں پر گوشت فروخت کیا جاتا ہوا پائیں تو ان کے خلاف کارروائیں کریں۔ وزیر نے ڈیری ڈیولپمنٹ افزائش مویشیاں وسکمیات کے سینئر عہدیداروں کے ساتھ میٹنگ منعقد کی۔ انہوں نے بتایا کہ سبزیاں‘ گوشت‘ مچھلی‘ میوے‘ چکن‘ انڈے‘ اشیائے ضروریہ کے تحت آتے ہیں لہذا ان اشیاء کی منتقلی کیلئے استعمال کی جانے والی گاڑیوں کی نقل وحرکت پر لاک ڈائون کے دوران کوئی تحدید نہیں ہوگی۔ تاہم انہوں نے بتایا کہ وہ اس بات کو نوٹ کرنے کیلئے تمام اقدامات کریں گے کہ بکریاں اور بھیڑیں پالنے والے انہیں حیدرآباد لائیں۔ انہوں نے بتایا کہ ضلع کلکٹران پولیس سپرنٹنڈنٹ اور محکمہ مال کے عہدیداروں کو ہدایت دی جائے گی کہ وہ بھیڑوں اور بکریوں کو پالنے والوں کو انہیں اضلاع سے حیدرآباد لانے کی اجازت دیں۔ اسی طرح سے ماہی گیروں کیلئے بھی مچھلیوں کی منتقلی کیلئے استعمال کی جانے والی گاڑیوں کو بھی اجازت دی جائے گی۔

حالات معمول پر آنے تک دسویں جماعت کے امتحانات منعقد نہ کرنے ہائیکورٹ کی ہدایت

ڈائرکٹر سرکاری امتحانات تلنگانہ نے 31مارچ تا 6اپریل ہونے والے دسویں جماعت کے امتحانات کو ملتوی کردیا ہے ۔ریاست میں لاک ڈاون کی صورتحال کے نتیجہ میں یہ قدم احتیاطی طورپر اٹھایاگیا ہے ۔قبل ازیں تلنگانہ ہائی کورٹ کی ہدایت پر دسویں جماعت کے امتحانات جو 23مارچ سے 30مارچ کے درمیان ہونے والے تھے کو بھی ملتوی کیاگیاتھا۔ڈائرکٹر سرکاری امتحانات اے ستیہ نارائنا نے کہا کہ دسویں جماعت کے امتحانات اور دیگر امتحانات کی نظر ثانی شدہ تواریخ کا جلد اعلان کیاجائے گا۔ تلنگانہ ہائیکورٹ جس نے مقدمہ کی آج عاجلانہ سماعت کی تھی اس نے ریاستی حکومت کو ہدایت دی ہے کہ وہ ساری دنیا کیلئے پریشان کن کوروناوائرس وباء سے متاثرہ حالات کے معمول تک لوٹنے تک ایس ایس سی امتحانات کو ملتوی کردے تاہم حکومت نے عرضی دائر کرتے ہوئے بتایا کہ قبل ازیں امتحانات کو ملتوی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ہائیکورٹ نے بتایا کہ 21روزہ لاک ڈائون کی وجہ سے اسکولس کو بند کردیا گیا ہے اور بہت سے طلباء مختلف مقامات سے رخصت ہوچکے ہیں اور دیگر متعدد انٹرنس امتحانات جو مارچ اور اپریل میں منعقد ہونے والے تھے انہیں ملتوی کردیا گیا ہے۔ یہ دوسرا موقع ہے کہ ریاستی حکومت نے ہائیکورٹ کی ہدایت پر ایس ایس سی امتحانات کو ملتوی کردیا ہے۔ قبل ازیں ایس ایس سی امتحانات 23تا 30مارچ منعقد ہونے والے تھے ان پر نظرثانی کرتے ہوئے انہیں 31مارچ تک 7اپریل مقرر کیا گیا تھا تاہم ہائیکورٹ کی ہدایت پر ریاستی حکومت نے ایس ایس سی امتحانات کو ملتوی کردیا ہے تاہم اسٹیٹ اگزامنیشن ڈپارٹمنٹ کے ڈائرکٹر ستیہ نارائنا ریڈی نے بتایا کہ ایس ایس سی امتحانات کی تاریخ کا عنقریب اعلان کیا جائے گا۔

ٹمریز انٹرنس ٹسٹ ملتوی

 بی شفیع اللہ سکریٹری تلنگانہ مائنارٹیز ریزیڈنشیل ایجوکیشنل انسٹی ٹیوشنس سوسائٹی نے کہا ہے کہ ریاست تلنگانہ میں لاک ڈاون کے پیش نظر تلنگانہ اقلیتی اقامتی جونیر کالجس سال اول اور تلنگانہ اقامتی اسکولس کی پانچویں تا آٹھویں جماعتوں میں تعلیمی سال 2020-21کے دوران داخلوں کے لئے ہونے والا انٹرنس ٹسٹ ملتوی کردیاگیا ہے ۔یہ انٹرنس ٹسٹ 12,18,20اپریل کو ہونے والا تھا۔انہوں نے اس سلسلہ میں جاری کردہ پریس ریلیز میں کہا کہ آئندہ کی تواریخ کا جلد ہی اعلان کیاجائے گا۔

تلنگانہ میں کوروناوائرس سے دوسری موت

نظام آباد میں آئسولیشن وارڈ میں زیر علاج 62سالہ شخص کی موت کے ساتھ ریاست تلنگانہ میں کوروناوائرس سے مرنے والوں کی تعداد 2ہوگئی۔ یہ شخص دراصل ایک متاثرہ سے ربط میں آگیا تھا جو اس کا دوست تھا اور خود متاثر ہوگیا۔ ڈاکٹرس نے متوفی کے افراد خانہ کو بھی احتیاطاً آئسولیشن وارڈس میں داخل کرلیا اور ان کے نمونے جانچ کیلئے گاندھی ہاسپٹل بھیجے گئے۔

اے پی کے نیلور کی جیل کے قیدیوں نے ماسکس تیار کئے

اے پی کے ضلع نیلور کی سنٹرل جیل کے قیدی کورونا وائرس سے بچنے کے لئے ماسکس کی تیاری میں صرف کررہے ہیں کیونکہ حالیہ دنوں کے دوران ماسکس کی طلب میں اضافہ ہوگیا ہے ۔نیلور کے قیدی ضلع انتظامیہ کے ساتھ بہتر تال میل کے ذریعہ معیاری کاٹن کے ماسکس تیار کررہے ہیں۔اس جیل کے بعض قیدی جو درزی ہیں کو جیل کے حکام نے ترغیب دی کہ وہ کاٹن کے چہرے کے ماسکس تیار کریں۔انہوں نے اس خصوص میں ضلع کلکٹر،ڈسٹرکٹ میڈیکل اینڈ ہیلت آفیسر اور سرکاری اسپتال کے طبی پیشہ وروں سے ماسکس کے ڈیزائن اور معیار کے سلسلہ میں بات کی جس کے بعد انتظامیہ نے تین سطحی کاٹن کے ماسکس کی تیاری کو ترجیح دی کیونکہ ضلع انتظامیہ نے اس کی تجویز پیش کی تھی اور محکمہ نے اس کی قیمت کا تعین کردیا۔اب ہزاروں ملازمین کو اس کی سپلائی پر توجہ مرکوز کی گئی ہے جو کورونا کی روک تھام سے متعلق سرگرمیوں میں مصروف ہیں۔سنٹرل جیل کے پاس 35ہزار چہرے کے ماسکس کے آرڈرس ہیں اور ٹیم کے ارکان ہر دن صرف ایک ہزار ماسکس تیار کررہے ہیں۔33قیدی ماسکس کی تیاری کا کام کر رہے ہیں اور ماسکس کی تیاری کے لئے ان درزیوں کو مشینیں فراہم کی گئی ہیں۔تاحال تقریبا15000ماسکس کی تیاری کا کام مکمل کرلیاگیا ہے اور اس کے میعار کے سبب اس کی طلب میں اضافہ ہوگیا ہے ۔عہدیدار جیل کے اوقات اور افرادی قوت میں کمی کے نتیجہ میں اس کی تیاری کو بہتر بنانے سے معذوری کا اظہار کررہے ہیں۔

تلنگانہ میں کام کرنے والے مزدور ہمارے خاندان کی طرح ہیں:کویتا

 ٹی آرایس کی سابق رکن پارلیمنٹ کے کویتا نے کہا کہ دوسری ریاستوں سے نقل مکانی کرتے ہوئے تلنگانہ میں کام کرنے والے مزدور ہمارے خاندان کی طرح ہیں۔کویتا جو تلنگانہ کی حکمران جماعت ٹی آرایس کی سینئر لیڈر و چیف منسٹر کے چندرشیکھرراوکی دختر ہیں نے انگریزی زبان میں کئے گئے ٹویٹ میں گذشتہ روز چیف منسٹر کے چندرشیکھرراو کی جانب سے میڈیا سے بات کرتے ہوئے ان مزدوروں کو غذا کی فراہمی اور دیگر سہولیات کے سلسلہ میں کی گئی یقین دہانی کا حوالہ دیا۔ چیف منسٹر نے کہا تھا کہ ریاستی حکومت ان مزدوروں کو ریاست کی ترقی کے عمل میں اپنا ساتھی مانتی ہے ۔کویتا نے اس خصوص میں اپنے والد کی پریس کانفرنس کی مختصر ویڈیو بھی پوسٹ کی۔اس دو منٹ 20سکنڈ کی ویڈیو میں چیف منسٹر نے ہندی میں ان مزدوروں سے مخاطب کرتے ہوئے کہا تھا کہ ریاستی حکومت ان مزدوروں کی تمام طرح سے مدد کرے گی۔

اے پی میں کووڈ۔19 کے دو نئے کیسس کی تصدیق

ہفتہ کی شب سے تاحال آندھراپردیش میں کووڈ۔19کے دو نئے کیسس کی اطلاع ملی ہے جس کے نتیجہ میں مریضوں کی تعداد 23تک پہنچ گئی ہے۔ سرکاری عہدیداروں نے آج یہ بات بتائی۔ کاکیناڈا کا ایک 49سالہ مرد اور راجمندری کا ایک 72سالہ فرد ریاست کے تازہ ترین متاثرین میں شامل ہیں۔ محکمہ صحت عامہ کے بیان میں بتایا گیا کہ دونوں مریِضوں کی سفری تفصیلات کا پتہ چلایا جارہا ہے۔ محکمہ کے طبی بلیٹن کے مطابق 23نمونوں کی گذشتہ شب سے جانچ کی گئی جن میں دو مثبت پائے گئے۔ سرکاری عہدیداروں نے بتایا کہ 23کے منجملہ 2مریض صحت یاب ہوچکے ہیں۔ ایک 35سالہ شخص جو سعودی عرب گیا تھا اور 17مارچ کو اسے وشاکھاپٹنم کے ہاسپٹل میں شریک کیا گیا تھا اس کا کووڈ۔19معائنہ مثبت نکلا ہے جبکہ اس پر علاج کا اچھا اثر ہورہا ہے۔ اتوار اور پیر کو اس مریض کی جانچ کی گئی تھی جبکہ اس کا نتیجہ منفی رہا تھا سب سے زیادہ یعنی 6کیسس ضلع وشاکھاپٹنم‘ گنٹور اور کرشنا سے علی الترتیب چار چار کیسس کی اطلاع ملی ہے۔ مشرقی گوداوری اور پرکاشم سے ایک ایک اور چتور‘ کرنول اور نیلور سے علی التریب ایک ایک کیس کی اطلاع ملی ہے۔ 29,672افراد جو بیرونی ممالک سے لوٹے ہیں ان کی نگرانی کی جارہی ہے۔ 29,494کو گھر پر اور 178کو ہاسپٹل میں الگ تھلگ رکھا گیا ہے۔ حکومت نے ہدایت کی ہے کہ تمام خانگی میڈیکل کالجس جنہیں ضلع کووڈ ہاسپٹل کی حیثیت سے نامزد کیا گیا ہے وہاں اضافی حصول نمونہ خون مراکز قائم کیے گئے۔ یواین آئی کے بموجب کورونا وائرس کے پیش نظر اے پی کے ضلع وجئے واڑہ میں ہائی الرٹ جاری ہے ۔اسی دوران کمشنر بلدیہ پی وینکٹیش نے کہا کہ وجئے واڑہ میں لاک ڈاون پرسختی سے عمل کیاجارہا ہے ۔انہوں نے کہاکہ منگل سے لاک ڈاون پر سختی سے عمل کیاجائے گا۔انہوں نے دعوی کیا کہ لوگوں کو ضروری اشیا کی خریداری کی اجازت دی جارہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ اے ٹی ایم میں رقم بھرنے والی گاڑیوں کو بھی صبح پانچ بجے سے 9بجے شب تک اس کی اجازت دی جارہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ پولیس،فائربریگیڈ،بجلی،ریونیو،صحت وطبابت کے محکمہ جات کی گاڑیوں کو ہر وقت جانے کی اجازت دی جارہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ پرنٹ اینڈ الکٹرانک میڈیا کی گاڑیوں،آئیل اینڈ گیس بھرنے والی گاڑیوں اور موبائل کمیونکیشنس کی گاڑیوں کو خصوصی اجازت دی جارہی ہے ۔اے پی میں بتدریج کورونا وائرس کے معاملات میں اضافہ کے پیش نظر حکومت نے تمام مناسب اقدامات کئے ہیں۔ان کے حصہ کے طورپر ریاست کے سلم علاقوں میں مفت موبائیل ہاتھ دھونے کے آلات فراہم کئے گئے ہیں تاکہ لوگ اپنے ہاتھ دھو سکیں۔سرکاری ذرائع نے تمام سے خواہش کی ہے کہ وہ اپنے گھروں میں ہی محدود رہیں اور اس بحران کی گھڑی میں حفظان صحت کا بطور خاص خیال رکھیں۔حکومت کا ماننا ہے کہ ہینڈ سائنٹائزرس کی کمی ہے کیونکہ لاک ڈاون کے نتیجہ میں اس کا کوئی بھی اسٹاک نہیں ہے جس سے دیہاتوں میں رہنے والوں کو کافی مشکلات کا سامنا ہے ۔اسی لئے حکومت کی جانب سے ہاتھ دھونے کے مفت اقدام سے لوگوں کو فائدہ ہورہا ہے جو اپنے ہاتھ اس سہولت سے استفادہ کرتے ہوئے دھورہے ہیں۔حکومت کا کہنا ہے کہ ہر دو گھنٹے میں حفظان صحت کے لئے اپنے ہاتھ دھوتے رہیں۔

پانڈیا برادرس نے ڈرائنگ روم کو انڈور اسٹیڈیم بنالیا

کورونا وائرس پھیلنے سے دنیا بھر کے کھیل منسوخ ہوگئے یا ملتوی ہوگئے جس کی وجہ سے کھلاڑیوں کو اپنے ارکان خاندان کے ساتھ وقت گزارنے کا موقع مل رہاہے۔ ایسے میں ہندوستانی کرکٹرز بھی اپنے گھر والوں کے ساتھ ہی رہنے پر مجبور ہیں۔ ہندوستانی ٹیم کے ہاردک پانڈیا اور کرونال پانڈیا نے انڈور کرکٹ کا کھیل کھیلنے کیلئے اپنے ڈرائنگ روم کو اسٹیڈیم میں تبدیل کردیا۔ دونوں بھائی اپنے ڈرائنگ روم کو اسٹیڈیم کے طورپر استعمال کرتے ہوئے یہاں انڈور کرکٹ کھیل کر وقت گزار رہے ہیں۔ ہاردک پانڈیا نے بتایاکہ حالات کیسے بھی ہوں ہم کرکٹ سے دور نہیں رہ سکتے۔ ایسے میں ہم دونوں بھائیوں نے ایک بہترین راستہ تلاش کیا اور وہ انڈور کرکٹ ہے۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ اپنے لئے اور اپنوں کیلئے خود کو گھروں تک محدود رکھیں اور حکومت کی جانب سے جاری کی گئی ہدایات پر عمل کریں ۔ انہوں نے کہاکہ یہ وقت کافی مشکل ہے اس لئے ہمیں احتیاط برتنے کی ضرورت ہے۔